The news is by your side.

Advertisement

حدیبیہ کیس فیصلہ میرٹ پر ہوتا تو منی لانڈرنگ کا خاتمہ ہو چکا ہوتا: وزیرِ اعظم

اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حدیبیہ کیس کا فیصلہ میرٹ پر ہو جاتا تو آج منی لانڈرنگ کا خاتمہ ہو چکا ہوتا۔

تفصیلات کے مطابق وزیرِ اعظم عمران خان سے وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری نے ملاقات کی، وزیر اعظم نے انھیں ہدایت کی کہ منی لانڈرنگ کی تفصیلات عوام تک پہنچائی جائیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ تمام تفصیلات میڈیا کے ذریعےعوام تک پہنچائی جائیں، گم راہ کرنے والوں کا اصل چہرہ عوام کو دکھایا جائے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ سابق صدر پرویز مشرف اگر شریف فیملی کو این آر او نہ دیتے تو منی لانڈرنگ ختم ہو جاتی، حدیبیہ کیس کا فیصلہ میرٹ پر ہوتا تو منی لانڈرنگ کا خاتمہ ہو چکا ہوتا۔

یہ بھی پڑھیں:  حمزہ شہباز کی منی لانڈرنگ کا ماڈل حدیبیہ کیس کی طرح لگتا ہے: فواد چوہدری

انھوں نے کہا ’حدیبیہ کیس کو ایسے تمام کیسز میں ماڈل کے طور پر استعمال کیا گیا، منی لاندڑنگ کے کیسز میں حدیبیہ کیس کا ماڈل استعمال کیا گیا ہے، فرنٹ مینوں کے ذریعے پیسا باہر بھیجا گیا اور واپس منگوایا گیا، نواز شریف اور آصف زرداری کے پیسے میں یہی ماڈل سامنے آیا ہے۔‘

وزیرِ اعظم عمران خان نے وزیر اطلاعات کو ہدایت کی کہ ملکی معیشت پر ان سیاہ کاریوں سے پڑنے والے نقصانات سے عوام کو آگاہ کیا جائے، ماضی کی سیاہ کاریوں سے عوام مہنگائی اور قرض کی دلدل میں پھنسے۔

انھوں نے کہا ’10 سال میں لیے گئے 60 ارب ڈالر قرضے کا حساب لیا جانا چاہیے، ماضی کے حکمران عوام کو مقروض بنا کر ذاتی تجوریاں بھرتے رہے، آئینی اصلاحات سے منی لانڈرنگ اور دیگر جرائم پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔‘

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں