The news is by your side.

Advertisement

وزیر اعظم نے “غربت مٹاؤ پروگرام” کا افتتاح‌ کر دیا، 80 ارب روپے مختص کرنے کا اعلان

اگلے 4 سال میں 33لاکھ افراد کی مدد کی جائے گی، 57 لاکھ خواتین کو سیونگ اکاؤنٹ بنا کر دیں گے

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے ملکی تاریخ کے سب سے بڑے ” غربت مٹاؤ پروگرام” کا افتتاح کردیا، غربت مٹاؤ پروگرام کا نام “احساس اورکفالت” رکھا گیا ہے، پروگرام کے تحت بیواؤں، یتیموں اور بزرگوں کو مالی مدد دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی جانب سے غربت مٹاؤ پروگرام کا افتتاح کر دیا گیا، اس موقع پر انھوں نے کہا کہ  ثانیہ نشتر کو یہ دستاویز تیار کرنے پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں، اس پروگرام پر عمل در آمد کے لئے جہاد کریں گے.

غربت مٹاؤ پروگرام میں 80 ارب روپے کا اضافہ کررہے ہیں، غریبوں کی مددکرنے والےتمام اداروں کوایک پلیٹ فارم پر لائیں گے

وزیر اعظم

انھوں نے کہا کہ پاکستان دنیامیں واحد ملک ہے، جو اسلام کےنام پر بنا، جو انسان کامیاب ہوتا ہے، لوگ اس سے سیکھنا چاہتے ہیں اور دنیا کے سب سے کامیاب انسان ہمارےنبیﷺ ہیں، نبیﷺ نے جو ریاست بنائی تھی، وہ مدینہ کی ریاست تھی، یورپ کے لوگوں نے مسلمانوں کی لائبریریوں میں ریسرچ کی.

انھوں‌ نے کہا کہ غربت مٹاؤ پروگرام انسانیت کے راستے پر چلنے کی پہلی کوشش ہے، انسانیت کی مدد کرنا ریاست کی ذمہ داری ہونی چاہیے، چین کی ہرپالیسی میں غربت کے خاتمے کا وژن ہے.

ان کا کہنا تھا کہ آرٹیکل 38 ڈی کہتا ہے کہ عوام کو تمام سہولتیں فراہم کرنی ہیں، غربت مٹاؤ پروگرام میں 80 ارب روپے کا اضافہ کررہے ہیں، غریبوں کی مددکرنے والےتمام اداروں کوایک پلیٹ فارم پر لائیں گے، غریبوں کی مدد کرنے والے اداروں کا ڈیٹا بیس دسمبر تک مکمل کرلیں گے، تفصیلات سے مکمل طورپر پتا چلے گا کہاں کتنے غریب لوگ موجود ہیں.

وزیراعظم نے کہا کہ غریبوں کی مدد کرنے والے اداروں کو ایک منسٹری کے نیچے لائیں گے، ملک کی تحصیلوں میں 500 ڈیجٹل حب بنا رہے ہیں.

انھوں نے کہا کہ حکومت تحفظ پروگرام کے ذریعے لوگوں کو قانونی مدد فراہم کرے گی، کسی بھی شیلٹر ہوم میں حکومت کا پیسہ خرچ نہیں ہورہا، شیلٹر ہوم میں لوگ خود آ کر پیسہ فراہم کر رہے ہیں، بیت المال 4 سال میں 10 ہزار یتیم بچوں کے لئے سوئٹ ہومز بنائے گا، اگلے 4 سال میں 33لاکھ لوگوں کی مدد کی جائے گی، انصاف انشورنس میں 33ارب روپے اضافہ کردیا ہے ، جنہیں انصاف کارڈ نہیں ملےگا، انھیں غربت مٹاؤ پروگرام میں لائیں گے، کلین اورگرین پاکستان مہم میں سیورج کے مسائل دور کریں گے۔

انھوں نے کہا کہ وزیراعظم آفس میں ملٹی سیکٹوریل نیوٹریشن باڈی بنائیں گے، پنجاب میں دودھ کی کوالٹی چیک کرنے کے لئے فوڈ انسپکٹرز کو بھیجا، افسوس ہے 75 فیصد کھلا دودھ پینے کے قابل نہیں ہے، بچوں کو جو کھلا دودھ دیاجارہا ہے، وہ حقیقی اجزا کے بغیر تھا،  کاروبار کے لیے دیہی خواتین کو بکریاں ،دیسی مرغیاں دی جائیں گی، خوردنی تیل کی کمپنیوں سے کسانوں کے لئے بیج لیں گے، بدقسمتی سے پاکستان میں معذور افراد کو بےحسی کا سامنا ہے ، معذور اور خصوصی افراد کے لئے 20 مراکز کھولے جائیں گے، بیرون ملک محنت کشوں کو گھر واپسی کے لئے رعایتی ٹکٹس فراہم کریں گے۔

عوام کو ہنر سکھانے کے لئے 25ارب روپے مختص کئے ہیں

وزیر اعظم


ان کا کہنا تھا کہ بلاسود قرضےدینےکےلئے 5ارب روپے مختص کردیئے، ای اوبی آئی کی پنشن 5200سےبڑھا کر 6500کررہے ہیں، ای اوبی آئی پنشن میں کرپشن روکنے کےلئے بائیومیٹرک سسٹم ہوگا، فشری کےشعبے میں آگے بڑھنے کے لئے چینی ماہرین کی مدد لےرہے ہیں، محنت کش اور مزدوروں کے حقوق کے لئے آواز اٹھائیں گے، ہم ملک کے پڑھے لکھے نوجوانوں کو ٹاسک دیں گے، آن لائن سسٹم کے ذریعے لوگوں کے لئے ملازمت کے مواقع فراہم کریں گے، عوام کو ہنر سکھانے کے لئے 25ارب روپے مختص کئے ہیں، 40مائیکروفنانس انسٹی ٹیوشنز کے پاس 400ارب روپے ہیں، کمرشل بینکس کومائیکروفنانس انسٹی ٹیوشنزکوپیسہ دینے کے لئے کہیں گے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے ڈاکٹر ثانیہ نشتر سے ملاقات میں پروگرام کی اصولی منظوری دی تھی، ابتدائی مرحلے میں ایک سو بیس ارب روپے کی رقم مختص کی گئی۔

مزید پڑھیں : ملک سے غربت کے خاتمے کے لیے پہلا بڑا قدم اٹھا رہے ہیں، وزیراعظم

قبل ازیں وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے ملک سے غربت کے خاتمے کے لیے پہلا بڑا قدم اٹھا رہے ہیں، عوام کااحساس ریاست کی اولین ترجیح ہے، غربت میں کمی کیلئےتمام وسائل بروئےکارلائیں گے۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ فلاحی ریاست کاتصور عوام کے احساس کے بغیر نامکمل ہوگا، چین کےتجربات سےاستفادے کی پوری کوشش کریں گے۔

یاد رہے وزیراعظم عمران خان نے صحت انصاف کارڈ کے پہلے مرحلے کے آغاز کی تقریب سے خطاب میں کہا تھا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بارغربت میں کمی کا پروگرام لارہےہیں، ہماری ہرپالیسی کامحورغربت ختم کرنا ہوگا چاہے جو بھی پالیسی ہو۔

خیال رہے 5 نومبر کو وزیرِ اعظم عمران خان نے چینی شہر شنگھائی میں ’پاکستان میں سرمایہ کاری اور تجارت‘ کے موضوع پر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ چین نے جو کچھ 70 سال میں حاصل کیا کوئی اور ملک حاصل نہیں کر سکا، چین نے 30 سال میں 70 کروڑ لوگوں کو غربت سے نکالا۔

وزیرِ اعظم نے اپنے خطاب میں غربت کے خاتمے کے لیے ہر ممکن اقدام کرنے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ ہم پاکستان میں غربت کے خاتمے کے لیے بڑا پیکج لا رہے ہیں، انسانی وسائل کی ترقی اور استعداد کار میں اضافے کے لیے اقدامات کیے جائیں گے، کیوں کہ ہمیں ہنر مند افرادی قوت کی ضرورت ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں