The news is by your side.

Advertisement

منی لانڈرنگ اور کرپٹ ارکان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہونے چاہئیں، وزیراعظم

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے منی لانڈرنگ اور اور کرپشن میں ملوث ارکان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہونے چاہئیں اور نہ ایسے قیدیوں کو جیل میں سیاسی قیدی کا درجہ نہیں ملنا چاہئیے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس جاری ہے ، اجلاس میں وزیراعظم نےاراکین پارلیمنٹ کے پروڈکشن آرڈر سے متعلق قوانین میں ترمیم کی ہدایت کر دی اور معاملہ وزارت قانون کے سپرد کر دیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا منی لانڈرنگ اور اور کرپشن میں ملوث ارکان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہونے چاہئیں اور نہ ہی منی لانڈرنگ اور کرپشن والے قیدیوں کو جیل میں سیاسی قیدی کا درجہ ملنا چاہیے۔

کابینہ نے حج پالیسی 2019 اور حج پالیسی 2019 کے تحت حجاج کے کوٹے میں اضافے کی منظوری دی۔

ذرائع نے بتایاکہ وزیراعظم نے وفاقی کابینہ کو اپنے دورہ امریکہ کے حوالے سے اعتماد میں لیا، وزیراعظم نے کہاکہ امریکہ جا کر پاکستان کی بات کروں گا، واشنگٹن میں پاکستانی سفارتخانے میں قیام کروں گا، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی بھی امریکہ جانیوالے وفد میں شامل ہوں گے۔

وفاقی کابینہ نےبورڈآف انوسٹمنٹ کے نئے چیئر مین کی منظوری بھی دے دی اور سید زبیر گیلانی چیئرمین بورڈ آف انوسٹمنٹ مقرر کردیا ، زبیر گیلانی کا تعلق بینکاری اور صنعتی شعبے سے ہے۔

یاد رہے وزیراعظم عمران خان نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا تھا کہ جن پر پیسے چوری کرنے کا الزام ہے وہ اسمبلی میں تقرریں کیسے کرسکتے ہیں  ، یہ ہمیں سلیکٹڈ کس منہ سے کہتے ہیں ، یہ تاریخی خسارہ چھوڑ گئےاورسوال بھی ہم سےکرتےہیں، ہم نےکرنٹ اکاؤنٹ کاخسارہ 30 فیصد کم کیاہے، منی لانڈرنگ کےخلاف پورےقدم اٹھارہےہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں