The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ ن اجلاس، حکومت یا الیکشن فیصلہ آئی ایم ایف پیکیج سے مشروط

مسلم لیگ ن کا مشاورتی اجلاس ہوا جس میں سابق وزیراعظم نواز شریف نے بھی ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی، جس میں حکومت برقرار رکھنے یا الیکشن کا فیصلہ آئی ایم ایف پیکیج سے مشروط کیا گیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق لاہور میں مسلم لیگ ن کا مشاورتی اجلاس ہوا جس میں مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز سمیت پارٹی کے اہم رہنماؤں نے شرکت کی جب کہ لندن سے سابق وزیراعظم نواز شریف نے بذریعہ ویڈیو لنک اس اجلاس میں شرکت کی۔

اجلاس کے حوالے سے ذرائع نے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ اجلاس پی ٹی آئی کے اسلام آباد لانگ مارچ اور قبل از وقت الیکشن پر مشاورت کی گئی اور پنجاب کے بڑے شہروں میں مزید جلسے کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں بذریعہ ویڈیو لنک شریک نواز شریف نے موقف اختیار کیا کہ گزشتہ حکومت کا ملبہ ہم کیوں اپنے سر لیں اگر آئی ایم ایف سے ریلیف پیکج نہیں ملتا تو بڑے فیصلے کیے جائیں۔

ذرائع نے بتایا کہ پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کے حوالے سے نواز شریف نے کہا کہ ملک کوانتشار کرنے والوں کےرحم و کرم پرنہ چھوڑا جائے، انہوں نے اجلاس میں موجود وفاقی وزیر داخلہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ رانا صاحب آپ تیار ہیں نا، جس پر رانا ثنا اللہ نے کہا کہ میاں صاحب آپ شہباز صاحب سے اجازت لے دیں۔

اجلاس میں نواز شریف نے کہا کہ لانگ مارچ کا شور آئی ایم ایف مذاکرات کو متاثر کرنے کیلیے مچایا گیا، لانگ مارچ پر اتحادیوں کو مکمل اعتماد میں لیا جائے بالخصوص ہر فیصلے میں آصف زرداری کو ساتھ رکھا جائے۔

ذرائع کے مطابق نواز شریف نے اجلاس میں شریک وزرا کو ہدایت کی کہ انتخابی اصلاحات کا بل جلد از جلد تیار کرکے قومی اسمبلی سے منظورکرایا جائے ساتھ ہی چیئرمین نیب کی تعیناتی پر اپوزیشن لیڈر سے فوری مشاورت کاآغاز کیا جائے۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیراعظم شہباز شریف اور وزیراعلیٰ حمزہ شہباز نے پنجاب میں نمبر گیم کے حوالے سے نواز شریف کو آگاہ کیا جب کہ مریم نواز نے موقف اختیار کیا کہ فوری الیکشن اور فریش مینڈیٹ ہی قومی وعوامی مسائل کا حل ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں