The news is by your side.

Advertisement

ن لیگ اور جماعت اسلامی آمنے سامنے

لاہور: پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور امیر جماعت اسلامی سراج الحق کے مابین ملاقات کے بعد پاکستان مسلم لیگ ن ردِ عمل سے خود کو نہ روک سکی۔

تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی سے تعلقات پر مسلم لیگ ن اور جماعت اسلامی آمنے سامنے آ گئے ہیں، دونوں جماعتوں کی جانب سے ایسی ٹوئٹس سامنے آئی ہیں جن سے پتا چلتا ہے کہ ن لیگ اس تعلق سے کتنی ناخوش ہے۔

اس سلسلے میں پہلا ٹوئٹ آج ن لیگی رہنما احسن اقبال کی جانب سے آیا، انھوں نے لکھا سراج الحق نے آخر کار جماعت اسلامی کا پی پی سے الحاق کر دیا۔

احسن اقبال نے لکھا کہ امیر جماعت اسلامی ڈسکہ ضمنی انتخاب اور چیئرمین و ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے لیے غیر جانب دار رہنے کا اعلان کرتے رہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی اور پی پی دونوں کو نیا سفر مبارک ہو۔

اس ٹوئٹ پر جماعت اسلامی کے رہنما قیصر شریف نے جواب دیتے ہوئے کہا گیلانی صاحب کو سینیٹر آپ نے منتخب کرایا، جماعت اسلامی نے نہیں۔

سیکریٹری انفارمیشن جماعت اسلامی نے ٹوئٹ کا جواب ٹوئٹ سے دیتے ہوئے لکھا، مریم نواز نے جلد یا بدیر فتح کی مبارک دی تھی ہم نے نہیں، چیئرمین کے لیے بھی ووٹ ن لیگ نے دیا۔

انھوں نے نصیحت کی کہ جماعت اسلامی کے لیے پریشانی ہونے کی بجائے اپنے رویے میں تبدیلی سے آگاہ کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں