راجا ظفر الحق کے جاری کردہ سینیٹ ٹکٹ مسترد، ن لیگ کے امیدوار آزاد قرار PMLN
The news is by your side.

Advertisement

ن لیگ سینیٹ الیکشن سے باہر:الیکشن کمیشن نے راجا ظفر الحق کے جاری کردہ ٹکٹ مسترد کردیے

اسلام آباد: میاں‌ نواز شریف کی پارٹی صدارت سے نااہلی کے بعد ن لیگ ایک اور بحران کا شکار ہوگئی، الیکشن کمیشن نے راجا ظفر الحق کی طرف سے جاری کردہ ٹکٹ مسترد کر دیے ہیں.

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن نے راجا ظفر الحق کی طرف سے جاری کردہ تمام ٹکٹ مسترد کرتے ہوئے ن لیگ کے امیدواروں کو آزاد قرار دے دیا.

الیکشن کمیشن کا موقف ہے کہ سینیٹ کے شیڈ ول میں تبدیلی نہیں لائی جاسکتی۔ اس فیصلے کے ساتھ پی پی 30 سرگودھا میں بھی ن لیگ کے امیدواروں کو آزاد قرار دے دیا ہے.

یاد رہے کہ میاں‌ نواز شریف کی نااہلی کے بعد ان کے بہ حیثیت پارٹی سربراہ تمام فیصلے کالعدم قرار پائے تھے، جس کی زد میں‌ سینیٹ کے لیے جاری کردہ ٹکٹس بھی آئے.

اس بحران سے نکلنے کے لیے ن لیگ نے ایک تکنیکی راستہ اختیار کیا اور پارٹی کے سینئر رہنما اور چیئرمین راجا ظفر الحق نے سینیٹ کے ٹکٹ جاری کرتے ہوئے یہ موقف اختیار کیا کہ وہ بہ طور چیئرمین ٹکٹ جاری کرنے کا اختیار رکھتے ہیں.

میرا نام محمد نوازشریف ہےاسےبھی چھیننا ہےتوچھین لو‘ نوازشریف

البتہ الیکشن کمیشن نے ان ٹکٹوں‌ کو مسترد کرتے ہوئے تمام امیدواروں‌ کو آزاد قرار دے دیا. الیکشن کیمشن کا موقف ہے کہ اب سینیٹ کے شیڈول میں کسی قسم کی تبدیلی نہیں لائی جاسکتی، راجا ظفر الحق بہ طور پارٹی چیئرمین ٹکٹ جاری کرنے کا اختیار نہیں‌ رکھتے.

خیال رہے کہ گذشتہ روز سپریم کورٹ نے انتخابی اصلاحات 2017 کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے کہا تھا کہ آئین کی دفعہ 62،63 پر پورا نہ اترنے والا نا اہل شخص کسی سیاسی جماعت کی صدارت نہیں‌ کرسکتا۔

انتخابی اصلاحات کیس: نوازشریف پارٹی صدارت کے لئے نااہل قرار

سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کے نتیجے میں نوازشریف مسلم لیگ ن کی صدارات کے لیے نا اہل ہوگئے ہیں، انہیں پاناما کیس میں آئین کی دفعہ 62،63 کے تحت نا اہل قراردیا گیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں