The news is by your side.

سیاحوں کے کیمپ پر برفانی ریچھ کا حملہ

ناروے میں ایک قطبی ریچھ نے سیاحوں کے ایک کیمپ پر حملہ کر کے ایک خاتون سیاح کو زخمی کر دیا، ریچھ کو بعد ازاں ہلاک کر دیا گیا۔

بین الاقوامی ویب سائٹ کے مطابق ناروے میں قطب شمالی کے دور دراز سوالبارڈ جزائر کے مقامی گورنر کا کہنا ہے کہ 8 اگست پیر کے روز ایک قطبی ریچھ نے سیاحوں کے ایک کیمپ میں گھس کر حملہ کر دیا، جس میں ایک فرانسیسی سیاح زخمی ہوگئیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ واقعے میں خاتون کو لگنے والے زخم جان لیوا نہیں تھے، تاہم بعد میں حملہ کرنے والے ریچھ کو مار دیا گیا۔

متاثرہ خاتون 25 افراد کے اس سیاحتی گروپ کا حصہ تھیں، جس نے سوالبارڈ جزیرہ نما کے وسطی حصے میں واقع سویسلیٹا میں اپنا سیاحتی کیمپ لگا رکھا تھا، حملے کی اطلاع ملتے ہی حکام ہیلی کاپٹر کے ذریعے جائے وقوعہ پر پہنچ گئے۔

خاتون کو بعد ازاں ہیلی کاپٹر کے ذریعے سوالبارڈ جزیرہ نما کی سب سے بڑی بستی لانگیئربیئن کے اسپتال لے جایا گیا۔ پہلے حملے کے بعد ریچھ پر فائرنگ کی گئی جس کے بعد وہ خوفزدہ ہو کر وہاں سے چلا گیا۔

بعد ازاں ریچھ زخمی حالت میں پھر سے نمودار ہوا جس پر قابو پانے کے بعد، اس کا اچھی طرح سے طبی معائنہ کیا گیا اور پھر دوا کی مدد سے اسے ابدی نیند سلا دیا گیا۔

خیال رہے کہ ناروے کے قطب شمالی علاقوں میں تقریباً 20 سے 25 ہزار قطبی ریچھ پائے جاتے ہیں۔ قطبی ریچھ جارحانہ جانور ہو سکتے ہیں اور وہ لوگوں پر حملہ کرنے اور مارنے کے لیے بھی جانے جاتے ہیں۔

جب خوراک کی قلت ہوتی ہے تو قطبی ریچھوں کو انسانوں کا شکار کرتے ہوئے بھی اکثر دیکھا گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں