The news is by your side.

Advertisement

وزیرِ اعلیٰ ہاؤس کے دروازے پر سیوریج کا پانی کیوں پھینکا؟ پی ٹی آئی رکن اسمبلی کے خلاف مقدمہ

کراچی: وزیرِ اعلیٰ ہاؤس سندھ کے دروازے پر سیوریج کا گندا پانی پھینکنا فکس اٹ کو مہنگا پڑ گیا، کراچی پولیس نے تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی عالمگیر خان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کے وزیرِ اعلیٰ ہاؤس کے دروازے پر چند دن قبل فکس اِٹ کے کارکنوں نے سیوریج کا پانی پھینکا تھا، جس پر پولیس نے کئی کارکنوں کو گرفتار کر لیا تھا۔

مسئلے کا حل گرفتاریاں ہیں تو سب سے پہلے گرفتاری دینے کو تیار ہوں، جیل بھرو تحریک شروع کر دیں گے۔

عالمگیر خان رکن قومی اسمبلی

آج پولیس نے فکس اٹ کے کارکنوں کو ضمانت پر رہا کر دیا، تاہم رکن قومی اسمبلی عالمگیر خان اور ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج کر دیا گیا ہے۔

عالمگیر خان نے کہا کہ اگر مسئلے کا حل گرفتاریاں ہیں تو سب سے پہلے گرفتاری دینے کو تیار ہوں، جیل بھرو تحریک شروع کر دیں گے، شاید اس طرح مسائل حل ہوجائیں۔

خیال رہے کہ چند دن قبل عالمگیر خان نے فکس اٹ کے کارکنوں کے ساتھ مل کر کراچی کی سڑکوں پر موجود گندے پانی کو لے جا کر سی ایم ہاؤس کے باہر پھینک دیا تھا۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر عالمگیر نے کہا کہ اس احتجاج کا مقصد سندھ کے نا اہل حکمرانوں کو احساس دلانا ہے کہ کراچی کے لوگ کس گندگی میں زندگی گزار رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  کراچی کے لیے 200 ارب کی سفارشات وزیراعظم کو ارسال

عالمگیر خان نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ اگر سیوریج کا گندا پانی ہمارے گھروں کے باہر بہتا رہتا ہے تو پھر سی ایم ہاؤس کو بھی اسی تکلیف سے گزرنا چاہیے تاکہ وزیرِ اعلیٰ اپنی ذمہ داری کا احساس کر سکیں۔

انھوں نے کہا کہ ان کا مقصد کسی شخصیت کی بے عزتی اور اسے نشانہ بنانا نہیں تھا، بلکہ علامتی انداز میں عام آدمی کے اس نظر انداز شدہ مسئلے کو سامنے لانا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں