The news is by your side.

Advertisement

پولیوورکر روبینہ شاہین عزم وہمت کی مثال بن گئیں

پشاور: خیبرپختونخوا سے تعلق رکھنے والی خاتون پولیو ورکر روبینہ شاہین نے مہم کے دوران مشکل حالات میں اپنے ساتھیوں کی لاشیں اٹھائیں لیکن ہمت نہیں ہاری اور آج وہ عزم وحوصلے کی مثال گئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخوا کے شہر پشاور میں روبینہ شاہین گزشتہ 26 سالوں سے پولیووائرس کے خلاف کمربستہ ہیں اور گھر گھر جاکر پولیو کے قطرے پلارہی ہیں، انہوں نے مہم کے دوران مشکل حالات سے مقابلہ کیا۔

ملک میں جب پولوورکز کو نشانہ بنایا جارہا تھا اس دوران روبینہ نے اپنے ساتھیوں کی لاشیں بھی اٹھائیں لیکن قوم کی خدمت کے لیے گھر نہیں بیٹھیں اور جدوجہد کا سلسلہ بدستور جاری رکھا۔

اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے خاتون پولیو ورکر کا کہنا تھا کہ چاہے کچھ بھی ہوجائے بچوں کو گھر گھر جاکر پولیو کے قطرے پلاتے رہیں گے، وائرس کے خلاف پولیو کے دو قطرے بچوں کو معذوری سے بچاسکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ والدین پولیو کے قطرے پلانے پر رضامندی ظاہر کریں یا نہ کریں ہم قطرے بچوں کو ضرور پلائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں