site
stats
پاکستان

نواز شریف اپنی اور مودی کی دوستی کی خاطر کشمیر میں ظلم و تشدد پر خاموش ہیں، بلاول بھٹو

اسلام آباد : چئیر مین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو ذرداری کی جانب سے بھارتی مقبوضہ کشمیر میں جاری فسادات اور بھارتی مظالم پر نواز شریف کی خاموشی پر کڑی تنقید کی۔

تفصیلات کے مطابق بلاول بھٹو نے کشمیر میں جاری ظلم و بر بریت اور ان مظالم پر نواز شریف کی مجرمانہ خاموشی کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ “اپنی اور مودی کی دوستی کی خاطر نواز شریف کشمیر میں جاری ظلم و تشدد پر خاموش ہیں، نواز مودی دوستی نے کشمیر کاز اور اْسکے نتائج کو ناقابلِ تلافی نقصان پہنچایا ہے ،معصوموں کے بہیمانہ قتلِ عام اور بھارتی افواج کے مظالم کے خلاف دفترِ خارجہ سے محظ ایک مذمتی بیان ناکافی ہے ۔

بلاول بھٹو نے مطالبہ کیا کہ نواز شریف اپنی مودی دوستی اور کشمیر دشمن رویے کو ترک کرتے ہوئے بھارتی حکومت کو کشمیر میں قتلِ عام روکنے کے لئے سخت ردِعمل دیں۔

بلاول بھٹو نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ عالمی برادی کو چاہئے کہ وہ بھارتی مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی جقوق کی کی سنگین خلاف ورزیوں کا نوٹس لیں ۔

مزید براں چئیرمین پی پی پی بلاول بھٹو نے آزاد کشمیر میں حویلی سے پی پی پی کے نامزد امیدوار فیصل راٹھور کے خلاف قتل کی ایف آئی آر کی مذمت کی جبکہ قتل فیصل راٹھور اس حادثے کی جگہ سے کافی دور اانتخابات کی تیاریوں میں مصروف تھے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ ن لیگ کاوطیرہ رہا ہے کہ وہ انتخابات سے پہلے امیدوار کو ڈرانے کے لئے اس طرح کے حربوں کا استعال کرتی ہے، ہراساں کرنے کے ن لیگ کے اوچھے ہتھکنڈوں سے ہم بخوبی واقف ہیں اور اسکو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دونوں جانب کے پر امن کشمیریوں کے خلاف غیر آئینی اقدامات سے ایسا محسوس ہورہا ہے کہ مودی اور نواز نے کشمیریوں کو نشانہ بنانے کے لئے ایک جیسی حکمتِ عملی اپنائی ہوئی ہے لیکن پاکستان پیپلز پارٹی کشمیریوں کے تحفظ کے لئے ہر ممکن اقدامات کریگی۔

واضح رہے کہ حریت رہنما برہان وانی کے قتل کے خلاف مظاہروں پر قابض بھارتی افواج کی جانب سے فائرنگ کے نتیجے میں درجنوں مظاہرین شہید جبکہ سینکڑوں زخمی ہیں اور بین الاقوامی ذرائع ابلاغ کے مطابق کرفیو کے نفاذ کے بعد گزشتہ 30 گھنٹوں کے دوران بھارتی افواج کی جانب سے بلا اشتعال فائرنگ سے 23بے گناہ مظاہرین قتل جبکہ 300 سے زائد زخمی ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top