The news is by your side.

Advertisement

عدلیہ کے فیصلے سے ملک کی قسمت لکھی جائےگی، بلاول بھٹو

پی پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عدلیہ کے فیصلے سے ملک کی قسمت لکھی جائےگی، ہماری درخواست ہے عمران خان نے جو کام کیا اسے روکا جائے۔

پی پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کو ہٹانے کا عدم اعتماد جمہوری اور آئینی طریقہ ہے، وزیراعظم نے آئین توڑ کر عدم اعتماد کا سلسلہ سبوتاژ کرنے کی کوشش کی، انہوں نے اپنی انا کی وجہ سے آئین توڑا، صدر، اسپیکر، ڈپٹی اسپیکر نے آئین توڑ کر عمران خان کی انا کو سنبھالا،وزیراعظم کو اندازہ نہیں کہ ہوا کیا ہے، انھوں نے کل خود بندوق اٹھا کر اپنی حکومت ختم کرلی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم خود اگر استعفیٰ دیتے تو وہ آئینی ہوتا، عدم اعتماد پر ووٹنگ ہوتی تو یہ جمہوری عمل  ہوتا، جب قومی اسمبلی میں آئین لاگو نہیں ہوسکتا تو پاکستان میں بھی نہیں ہوسکتا۔

پی پی چیئرمین نے مزید کہا کہ کیا عمران خان کی انا اہم ہے یا پاکستان کا آئین اور سپریم کورٹ اہم ہے، یہ فیصلہ اب ہونے جارہا ہے، عدلیہ سے ہماری درخواست ہے عمران خان نے جو کام کیا اسے روکا جائے، عدلیہ کےفیصلے سے ملک کی قسمت لکھی جائےگی، سیاسی جماعتیں اس بات پر خوش نہیں ہونگی کہ غیرآئینی کام کیا جائے، فل کورٹ بینچ تشکیل دیا جائے جو اہم کیس کا فیصلہ سنائے۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ہم سب جمہوریت پسند لوگ ہیں،1973 کے آئین کی بنیاد بھی ہم نے رکھی، ہم نے عدم اعتماد کےذریعے3ماہ اس حکومت کا جینا حرام کیا، عمران خان اوراسکی حکومت ہماری سیاسی بندوق کی نوک پر تھی۔ سلیکٹڈ حکومت کو گھربھیجنے میں ہم کامیاب ہیں۔ پیپلز پارٹی کے کارکنان جشن منا رہے ہیں کہ عمران خان کی حکومت ختم ہوگئی۔

انہوں نے کہا کہ پہلے دن جب انھیں سلیکٹڈ کہا تو جشن منا رہے تھے، آج ان کی حکومت ختم ہوئی ہے تو اس پر بھی جشن منارہےہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں