The news is by your side.

Advertisement

پی پی کا مطالبہ مسترد، ن لیگ کا کرارا جواب

مسلم لیگ ن کے مرکزی صدر شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ معافی کس بات کی مانگیں، ‏پیپلزپارٹی مضحکہ خیزباتیں نہ کرے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ‏اپوزیشن لیڈر سینیٹ کیلئےاسٹیبلشمنٹ سےحمایت لی گئی ہماری نظرمیں پیپلزپارٹی اپنی زبان ‏سےپھرگئی ہے، آپ کےبھی دائیں بائیں کون لوگ کھڑےہیں بہت کچھ بتاسکتےہیں۔

انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کو جواب دینا چاہیےتھالیکن شوکاز پھاڑ دیا تو مطلب جواب آگیا، پی ڈی ‏ایم اجلاس ہوگاجس میں مستقبل کےفیصلےہوں گے، پیپلزپارٹی پراعتمادختم ہو گیا تو اتحاد کا ‏مقصدہی ختم ہو گیا۔

لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میرا نہیں خیال پی ڈی ایم اجلاس میں پیپلزپارٹی کو بلایا جائےگا، اعظم ‏تارڑ پر اعتراض تھاتوایک وٹس ایپ پیغام ہی بھیج دیتے، پی ڈی ایم ایک تحریک اورایک ‏مقصدہےجوجاری رہےگی، جوبھی پی ڈی ایم چھوڑے گا اپنانقصان کرےگا، میری خواہش ہےپی ڈی ‏ایم میں تمام جماعتیں شامل ہوں۔

شاہدخاقان عباسی نے کہا کہ پیپلزپارٹی کوبتاناتھاان کی سی ای سی کافیصلہ کیاہے، پیپلزپارٹی ‏کےسی ای سی فیصلے کے بعد پی ڈی ایم اجلاس بلاناتھا، پی ڈی ایم کےفورم پرفیصلہ ہواتھاپیپلزپارٹی ‏نےاپنی زبان توڑی، مولانافضل الرحمان پی ڈی ایم کااجلاس طلب کرنےکافیصلہ کریں گے پیپلزپارٹی ‏کو غلط فہمی چھوڑ دینی چاہیےپی ڈی ایم 10 جماعتوں نےبنائی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں