The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں مسلمان حاملہ خاتون کو اسپتال میں داخل کرنے سے انکار، نومولود دم توڑ گیا

بچے کی پیدائش ایمبولینس میں ہوئی

نئی دہلی: بھارت کے ایک اسپتال میں مسلمان حاملہ خاتون کو ڈلیوری کے وقت اسپتال میں داخل کرنے سے انکار کردیا گیا، بچے کی پیدائش ایمبولینس میں ہوئی جس کے کچھ دیر بعد نومولود دم توڑ گیا۔

راجستھان کے ضلع بھرت پور کے ایک سرکاری اسپتال پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ اسپتال انتظامیہ نے ایک حاملہ خاتون کو مسلمان ہونے کی وجہ سے داخل کرنے سے منع کر دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق خاتون کے 34 سالہ شوہر عرفان کا کہنا ہے کہ مذکورہ اسپتال کے ڈاکٹروں نے مسلمان ہونے کی وجہ سے ان کی حاملہ بیوی کو داخل نہیں کیا اور جے پور جانے کا کہا۔

عرفان اپنی بیوی کو جے پور لے جانے کے لیے ایمبولینس میں سوار ہوئے تاہم راستے میں ہی بچے کی پیدائش ہوگئی، ان کے مطابق وہ بھرت پور کے ایک اور اسپتال میں گئے تاہم وہاں بھی انتظامیہ نے انہیں واپس لوٹا دیا۔

اسی دوران مناسب دیکھ بھال نہ ہونے سے نوزائیدہ بچہ دم توڑ گیا۔

بھرت پور کے ریاستی وزیر سبھاش گرگ نے اس بات سے انکار کیا ہے کہ مسلمان ہونے کی وجہ مذکورہ جوڑے کے ساتھ ایسا سلوک ہوا۔ سیکریٹری صحت نے بھی واقعے کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

حکام نے مسلمان جوڑے کے الزامات کو رد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ تحقیقاتی رپورٹ آنے کا انتظار کر رہے ہیں اور اس کے بعد ہی کوئی کارروائی کی جائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں