The news is by your side.

Advertisement

صدرمملکت نے ہائیرایجوکیشن کمیشن ترمیمی آرڈیننس2021 کی منظوری دے دی

اسلام آباد: صدرمملکت عارف علوی  نے ہائیرایجوکیشن کمیشن ترمیمی آرڈیننس2021 کی منظوری دے دی، جس کے تحت ہائیر ایجوکیشن کمیشن کی خود مختاری ختم ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق صدر پاکستان عارف علوی  نے ہائیرایجوکیشن کمیشن ترمیمی آرڈیننس2021کی منظوری دےدی ، آرڈیننس کا اطلاق 26 مارچ سے ہوگا۔

آرڈیننس کےتحت ہائیرایجوکیشن کمیشن کی خود مختاری ختم ہوگئی ہےاور ایچ ای سی کےفیصلےوزارت تعلیم کی منظوری سے مشروط کردیئے گئے ہیں۔

آرڈیننس میں کہا گیا ہے کہ چیئرمین ایچ ای سی کی تعیناتی2سال اور ممبران ایچ ای سی کی تعیناتی4سال کیلئے ہوگی، چیئرمین اورممبران ایچ ای سی مزیدایک ٹرم بھی لےسکیں گے۔

خیال رہے وفاقی حکومت نےسابق چیئرمین ہائیرایجوکیشن کمیشن طارق بنوری کو26 مارچ کو ہٹایا تھا۔

دوسری جانب پیپلز پارٹی نے پیپلزپارٹی ایچ ای سی کووزارت تعلیم کےماتحت کرناسازش قرار دے دیا ہے ، سینیٹر شیری رحمان نے کہا ہے کہ ایچ ای سی آرڈیننس اور اس کےپیچھےچھپے مقاصد کی مذمت کرتےہیں، حکومت نے ایچ ای سی کی خودمختاری ختم کرنےکافیصلہ کس مقصد کے لئے کیا؟

پی پی رہنما کا کہنا تھا کہ آپ تعلیم کوایڈہاک بنیادپرآرڈیننس سے نہیں چلاسکتے، آپ کی نیت ٹھیک ہےتوبل لائیں، قانون سازی کریں، ایچ ای سی آرڈیننس کو سینیٹ میں مستردکریں گے۔

انھوں نے مزید کہا کہ تسلیم شدہ ادارےکووفاقی حکومت کےماتحت کرناتعلیم دشمنی ہے، نئے ادارے بنانے کے بجائے پرانے اداروں پر قبضہ کیا جارہا ہے، حکومت ایک خود مختار تعلیمی ادارے کو تباہ نہ کرے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں