site
stats
پاکستان

نجی اسکولوں کا اضافی اور غیر قانونی فیس وصول کرنے کا سلسلہ جاری

کراچی : نجی اسکولوں کی جانب سے اضافی اور غیر قانونی فیس وصول کرنے کا سلسلہ جاری ہے، والدین نے شکایت کرتے ہوئے کہا کہ اسکول فیس ایک دن کی تاخیرسے جمع کرانے پر چار سو روپے سے ایک ہزار روپے تک سرچارج وصول کیا جاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آل سندھ پیرنٹس ایسو سی ایشن کے مطابق سالانہ چارجز کے نام پر بھی تین ہزار روپے سے لیکر دس ہزار روپے تک وصول کئے جاتے ہیں، فیسوں میں اضافے کیخلاف احتجاجی مہم عید الاضحی کے بعد دوبارہ شروع کی جائے گی۔

قواعد کے مطابق تعلیمی ایکٹ میں سالانہ فیس جمع کرانے کی اجازت نہیں۔

والدین کا کہنا ہے کہ نجی اسکولوں میں بچوں سے پانچ سے چھ ہزار روپے کی اسٹیشنری منگوائی جاتی ہے، والدین نے ڈائریکٹر جنرل پرائیوٹ انسٹیٹیوشنز سے اپیل کی کہ وہ صورتحال کا نوٹس لیں۔

ڈائریکٹر جنرل پرائیوٹ اسکول ڈاکٹر منصوب صدیقی نے کہا کہ دو نجی اسکولوں کو نوٹسز پہلے ہی جاری کئے جاچکے ہیں جبکہ ڈپٹی ڈائریکٹر پرائیوٹ اسکول عبدالستار کی سربراہی میں دو کمیٹیاں تشکیل دی جاچکی ہیں،کمیٹیوں کی رپورٹ آنے اور عدالتی فیصلے کے بعد پرائیوٹ اسکول نئی گائیڈ لائن فراہم کرے گا۔

ڈائریکٹر جنرل پرائیوٹ اسکول کا کہنا ہے کہ والدین فیسوں میں غیر قانونی فیسوں میں اضافے کیخلاف اپنی درخواستیں ڈائریکٹر یٹ پرائیوٹ اسکول آفس میں جمع کرائیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top