منگل, مئی 21, 2024
اشتہار

کرو یا مرو، آج کراچی اور کوئٹہ مدمقابل آئیں گے

اشتہار

حیرت انگیز

ایچ بی ایل پاکستان سپر لیگ 8 کا پہلا مرحلہ اختتام کی جانب گامزن ہے ایونٹ میں مشکل صورتحال سے دوچار کراچی کنگز اور کوئٹہ گلیڈیئٹرز آج مدمقابل آئیں گی۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق ایچ بی ایل پاکستان سپر لیگ 8 میں سنسنی خیز پہلا مرحلہ اختتام کی جانب گامزن ہے۔ دفاعی چیمپئن لاہور قلندرز اور اسلام آباد یونائیٹڈ نے پلے آف کے لیے کوالیفائی کرلیا ہے جب کہ مزید کون سی دو ٹیمیں اگلے مرحلے میں جائیں گی اس کا فیصلہ آنے والے میچز کریں گے۔

اے آر وائی نیوز کی براہ راست نشریات دیکھنے کے لیے کلک کریں:

- Advertisement -

راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں آج ایونٹ کے 22 ویں میچ میں کراچی کنگز اور کوئٹہ گلیڈیئٹرز ایک دوسرے سے ٹکرائیں گی۔ رواں ٹورنامنٹ میں دونوں ٹیمیں مشکلات کا شکار ہیں اور ایونٹ میں رہنے کے لیے آج دونوں ٹیموں کو ہی لازمی جیت درکار ہے۔

کراچی کنگز ایونٹ میں اب تک 8 میچز کھیل کر دو میں فاتح رہی ہے اور 4 پوائنٹ حاصل کر رکھے ہیں۔ کنگز کو پلے آف تک رسائی کا امکان برقرار رکھنے کے لیے اپنے اگلے دونوں میچز لازمی جیتنا ہوں گے۔

کوئٹہ گلیڈیئٹرز کے لیے بھی صورتحال ملتی جلتی ہے۔ وہ ایونٹ میں 7 میچز کھیل کر صرف ایک ہی جیت پائی ہے اور یہ کامیابی بھی اسے کنگز کے خلاف ہی ملی تھی۔ گلیڈیئٹرز کو اگلے مرحلے میں جانا ہے تو اپنے اگلے تینوں میچز میں لازمی فتح درکار ہوگی۔

آج دونوں ٹیموں کیلیے کرو یا مرو کی صورتحال ہے۔ جیت رکھے گی آگے جانے کی امید برقرار، دونوں ٹیمیں دو اہم پوائنٹس کے حصول کے لیے میدان میں اتریں گی جو بھی ہاری وہ ایونٹ سے باہر ہوگی۔ کراچی اور کوئٹہ شکستوں کا جمود توڑنے کے لیے آج سرتوڑ کوششیں کریں گی۔

پی ایس ایل میں دونوں ٹیموں کے باہمی مقابلوں میں گلیڈیئٹرز کو واضح برتری حاصل ہے۔ کراچی کنگز اور کوئٹہ گلیڈیئٹرز اب تک 15 بار ایک دوسرے کے خلاف میدان میں اتری ہیں۔ 10 میں کوئٹہ جب کہ 5 میں کراچی کے ہاتھ فتح آئی ہے۔

میچ شام 7 بجے پنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں شروع ہوگا پی ایس ایل کے تمام میچز اے اسپورٹس پر براہ راست دکھائے جا رہے ہیں۔

Comments

اہم ترین

ریحان خان
ریحان خان
ریحان خان کو کوچہٌ صحافت میں 25 سال ہوچکے ہیں اور ا ن دنوں اے آر وائی نیوز سے وابستہ ہیں۔ملکی سیاست، معاشرتی مسائل اور اسپورٹس پر اظہار خیال کرتے ہیں۔ قارئین اپنی رائے اور تجاویز کے لیے ای میل [email protected] پر بھی رابطہ کر سکتے ہیں۔

مزید خبریں