site
stats
اہم ترین

دہشت گردی کے خدشات مسترد، پی ایس ایل کا فائنل لاہور میں کرانے کی منظوری

لاہور: حکومت نے دہشت گردی کے تمام تر خدشات کو مسترد کرتے ہوئے پی ایس ایل کا فائنل لاہور میں کرانے کی منظوری دے دی، اعلان کل یا پرسوں وزیراعلیٰ پنجاب کریں گے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ پاکستان سپر لیگ کے حوالے سے حکومت نے تمام تر سیکیورٹی خدشات کو مسترد کرتے ہوئے جرات مندانہ قدم اٹھایا ہے، جس کی ایک بڑی وجہ پاک فوج کی جانب سے فائنل میچ کو سیکیورٹی فراہم کرنے کی پیش کش کرنا ہے۔

اطلاعات ہیں کہ اس حوالے سے کئی روز سے بات چیت جاری تھی تاہم اب حتمی فیصلہ کرلیا گیا ہے قبل ازیں صرف اطلاعات ہی تھیں۔


Here is the news of the day, PSL2017 final will… by arynews

وزیر قانون پنجاب رانا ثنا للہ نے تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ایک اعلیٰ سطح اجلاس میں تمام سیکیورٹی اداروں کے اعلیٰ افسران نے شرکت کی اور فائنل کی سیکیورٹی کی یقین دہانی کرائی، اجلاس میں باہمی مشاورت سے فیصلہ کیا گیا کہ پی ایس ایل کا فائنل دبئی کے بجائے لاہور میں ہی کرایا جائےگا جس کے لیے تمام تر وسائل استعمال کیے جائیں گے۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندہ لاہور خواجہ نصیر نے بتایا کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے ایک دم واضح فیصلہ دیا ہے کہ میچ لاہور میں ہی ہوگا، سیکیورٹی سخت رکھی جائے۔

رپورٹر کے مطابق پاک فوج کے ساتھ ساتھ رینجرز اور پولیس کے 3 ہزار جوان خدمات انجام دیں گے، اس بات کا اعلان وزیراعلیٰ پنجاب کل یا پرسوں کریں گے۔

چیئرمین پی سی بی نے کہا ہے کہ یہ فیصلہ خوش آئند ہے،ہماری کوششیں رنگ لے آئیں، فیصلے سے ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی میں مدد ملے گی۔

واضح رہے کہ پی ایس ایل کا فائنل میچ پانچ مارچ کو ہونا تھا ، لاہور میں فائنل کے انعقاد کے اعلان کےساتھ ہی ملک بھر میں 13 فروری سی دہشت گردی کی نئی لہر شروع ہوئی جس کی وجہ سے لاہور میں فائنل کا انعقاد کھٹائی میں پڑ گیا تھا، غیر ملکی کھلاڑیوں کی آمد مشکوک ہوگئی تھی۔

کئی اجلاسوں کے بعد بالآخر حتمی فیصلہ کرلیا گیا حکومت اپنے اعلان سے پیچھے نہیں ہٹے گی، غیر ملکی کھلاڑی پاکستان آئیں یا نہ آئیں فائنل لاہور میں ہی ہوگا۔

اطلاعات ہیں کہ کھلاڑیوں کو ہوٹل سے اسٹیڈیم تک لانے کے لیے انہیں وزیراعظم کی سطح کی وی آئی پی سیکیورٹی دی جائے گی، سڑکیں ٹریفک کے لیے بند کردی جائیں گی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top