اسپاٹ فکسنگ: خالد لطیف طبیعت کی ناسازی کی بنا پرٹربیونل کےسامنے پیش نہ ہوسکے -
The news is by your side.

Advertisement

اسپاٹ فکسنگ: خالد لطیف طبیعت کی ناسازی کی بنا پرٹربیونل کےسامنے پیش نہ ہوسکے

لاہور: اسپاٹ فکسنگ کیس میں پی سی بی ٹربیونل کی پہلی سماعت میں خالد لطیف طبیعت خراب ہونےپرپیش نہ ہوسکے۔

تفصیلات کےمطابق پی ایس ایل کےدوران کھلاڑیوں کےاسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں ملوث ہونے سے متعلق تحقیقات کے لیے بنائے گئے پی سی بی کے ٹربیونل کی پہلی سماعت ہوئی۔

ٹربیونل کی پہلی سماعت پر خالدلطیف طبیعت کی ناسازی کی وجہ سے پیش نہیں ہوئے۔انہیں ٹربیونل نے اُنہیں ایک ہفتے کی مہلت دیتے ہوئے 31مارچ کو طلب کرلیا۔

دوسری جانب شرجیل خان اپنے وکیل کے ہمراہ پی سی بی ٹربیونل کےسامنے پیش ہوئے اُنہیں ٹربیونل نےاپنا جواب جمع کرانے کے لیے پانچ مئی تک مہلت دے دی۔

پی سی بی ٹربیونل نےاسپاٹ فکسنگ اسکینڈل کی 15مئی سے روزانہ کی بنیاد پر سماعت کرنے کا فیصلہ کیاہے۔


مزید پڑھیں:اسپاٹ‌ فکسنگ کیس: ایف آئی اے اور پی سی بی میں‌ اختلافات ختم


یاد رہےکہ گزشتہ روز پی ایس ایل اسپاٹ فکسنگ کیس میں کھلاڑیوں سے تحقیقات کے معاملے پر ایف آئی اے اور پی سی بی کے درمیان اختلافات ختم ہوگئےتھے جس کےبعد دونوں نے مشترکہ تحقیقات کا فیصلہ کیاتھا۔


مزید پڑھیں:اظہرعلی اورسہیل خان کو مکی آرتھر کےکہنےپرڈراپ نہیں کیا انضمام الحق


واضح رہےکہ گزشتہ روز چیف سلیکٹر انضمام الحق کاکہناتھاکہ اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل کا دکھ اورشرجیل خان کااس کیس میں ملوث ہونے سے ٹیم کوبڑا نقصان ہوا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں