شین واٹسن کی شاندار بیٹنگ، گلیڈی ایٹرز کے ہاتھوں لاہور قلندرز کو شکست psl2018
The news is by your side.

Advertisement

شین واٹسن کی شاندار بیٹنگ، گلیڈی ایٹرز کے ہاتھوں لاہور قلندرز کو شکست

دبئی: پاکستان سپرلیگ کے پانچویں میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی ٹیم نے شین واٹسن کی عمدہ اننگز کی بدولت لاہور قلندرز کو 9 وکٹوں سے شکست دے کر پہلا میچ جیت لیا۔

تفصیلات کے مطابق دبئی اسٹیڈیم میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور لاہور قلندرز کی ٹیمیں مد مقابل تھیں، گلیڈی ایٹرز کی قیادت سرفراز احمد جبکہ قلندرز کی کپتانی برینڈن میکولم نے کی۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر مخالف ٹیم لاہور قلندرز کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی، قلندرز کی ابتدا میں بیٹنگ اچھی رہی تاہم گلیڈی ایٹرز نے دفاعی حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے میکولم الیون کو محدود کردیا۔

قلندرز کی جانب سے اننگز کا جارحانہ آغاز کیا گیا، اوپننگ کے لیے آنے والی جوڑی نے شروع سے ہی تیز کھیل کھیلا تاہم 46 کے مجموعی اسکور پر نارائن آؤٹ ہوکر پویلین لوٹے اور پھر فخر زمان 60 کے مجموعی اسکور پر پویلین روانہ ہوئے، بعد ازاں پانچویں اوور میں کپتان میکولم بھی 30 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے اور نمایاں بلے باز بھی رہے۔

میکولم کے بعد کوئی بھی کھلاڑی زیادہ دیر تک وکٹ پر ٹک نہیں سکا اور وکٹیں گرنے کا سلسلہ جاری رہا، 79 کے مجموعی اسکور پر کیمرون، 81 پر عمر اکمل، 89 پر رضا حسن، 101 پر گلریز، 105 پر یاسر شاہ اور 106 پر شاہین آفریدی آؤٹ ہوئے۔

گلیڈی ایٹرز کے باؤلر محمد نواز نے اپنے کامیاب چار اوور کیے جن میں سے ایک میڈن، جبکہ تین میں صرف چار رنز دیے اور دو کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی، ارچر تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کر کے نمایاں باؤلر رہے جبکہ راحت علی، واٹسن اور حسن خان نے ایک ایک کھلاڑی کو پویلین بھیجا۔ قلندرز کی ٹیم نے مقررہ 20 اوورز میں 119 رنز بناکر گلیڈی ایٹرز کو جیت کے لیے 120 رنز کا ہدف دیا۔

ہدف کے تعاقب میں گلیڈی ایٹرز نے بیٹنگ کا آغاز کیا تو اسد شفیق اور شین واٹسن اوپننگ کے لیے آئے، دونوں بلے بازوں نے محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے ٹیم کی پوزیشن مستحکم کی اور 92 پر اسد شفیق کی واحد وکٹ گری۔

گلیڈی ایٹرز کی ٹیم نے 120 رنز کا ہدف ایک وکٹ کے نقصان پر 14 اوورز میں حاصل کر کے فتح اپنے نام کی، واضح رہے کہ سپر لیگ میں لاہور قلندرز کی مسلسل دوسری شکست ہے، شین واٹسن 66 اور اسد شفیق 38 رنز بنا کر نمایاں بلے باز رہے۔

فائنل اسکور کارڈ

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز

گیارہویں اوور کی چوتھی بال پر شین واٹسن سنیل نارائن کے ہاتھوں کلین بولڈ ہوکر پویلین لوٹے انہوں نے 42 گیندوں پر 5 چھکوں اور 5 چوکوں کی مدد سے 66 رنز اسکور کیے اور 14ویں اوور میں گلیڈی ایٹرز نے 120 رنزکا ہدف حاصل کر کے پہلی فتح اپنے نام کی۔

شین واٹس نے محتاط انداز میں جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے 33 گیندوں پر 4 چھکوں اور پانچ چوکوں کی مدد سے 56 رنز اسکور کیے، دسویں اوور کی آخری بال پر شین واٹسن نے ایک بار پھر گیند کو باؤنڈری کے باہر پھینک کر 6 رنز حاصل کیے اور اس طرح ٹیم کا مجموعی اسکور بغیر کسی نقصان کے 85 تک پہنچا، آخری 30 گیندوں پر 50 رنز بنے۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی جانب سے اننگز کا آغاز اسد شفیق اور شین واٹسن نے کیا جبکہ قلندرز کی جانب سے پہلا اوور رضا حسن نے کروایا، اوپنرز نے محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے ابتدائی پانچ اوورز میں بغیر کسی نقصان کے 35 رنز اسکور کیے۔

لاہور قلندرز

آخری کے پانچ اوورز میں قلندرز کے تین بیٹسمین گلریز صدف 13 ، یاسر شاہ 2 اور شاہین آفریدی بغیر رن بنائے پویلین لوٹے، سہیل اختر اور مستفیض الرحمان نے محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں ٹیم کا مجموعی اسکور 119 تک پہنچایا۔

لاہور قلندرز کی ٹیم نے محتاط انداز میں بیٹنگ کی اور اگلے پانچ اوورز میں ایک وکٹ کہو کر مجموعی اسکور میں صرف 17 رنز کا اضافہ کیا، 15ویں اوور کے اختتام پر میکولم الیون کا مجموعی اسکور 6 وکٹوں کے نقصان پر 101 تک پہنچا۔

گلیڈی ایٹرز کے باؤلروں نے قلندرز کی جارحانہ اننگز کے خلاف دفاعی حکمت عملی اختیار کی اور یکے بعد دیگرے دو کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی، دس اوور کے اختتام پر قلندز کا مجموعی اسکور 5 وکٹوں کے نقصان پر 84 تک پہنچا۔

لاہور قلندرز کی جانب سے اننگز کا آغاز برینڈن میکولم اور سنیل نارائن نے کیا جبکہ گلیڈی ایٹرز کے باؤلر جوفا ارچی نے پہلا اوور کروایا، قلندرز کے قائد نے ابتداء سے ہی جارحانہ بیٹنگ کی اور دو اوورز میں 21 رنز اسکور کیے۔

تیسرے اوور کی تیسری بال پر اوپنر سنیل نارائن راحت علی کی بال پر انور علی کے ہاتھوں 28 کے انفرادی اسکور پر آؤٹ ہوکر پویلین لوٹے جبکہ پانچویں اوور کی آخری بال پر نئے آنے والے بیٹسمین فخر زمان بھی صرف ایک رن بنا کر ارچی کی بال پر انہی کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوکر پویلین لوٹے، پانچویں اوور کے اختتام پر قلندرز کی ٹیم نے 2 وکٹوں کے نقصان پر 60 رنز اسکور کیے۔

سرفراز احمد نے ٹاس جیت پر مخالف ٹیم کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی اور اس امید کا اظہار کیا کہ پچ باؤلرز کے لیے مددگار ہے کوشش رہے گی کہ مخالف ٹیم کو کم سے کم ہدف تک محدود رکھا جائے۔

برینڈن میکولم نے کہا ٹاس جیتنے کی صورت میں ہم نے پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا کیونکہ دوسری اننگز میں اوس کے باعث پچ میں سؤنگ آجاتا ہے جس کے باعث ہدف کا تعاقب کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔

اسکواڈ

واضح رہے کہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور لاہور قلندرز کی ٹیموں کو ایک ایک میچ میں شکست کا سامنا رہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں