The news is by your side.

Advertisement

پی ایس ایل 4: پشاور زلمی نے کراچی کنگز کے خلاف میچ جیت لیا

کراچی: پاکستان سپرلیگ کے تیسویں میچ میں پشاور زلمی نے کراچی کنگز کو شکست دے دی، میزبان ٹیم ایلیمنٹری راؤنڈ کا میچ 14 مارچ کو اسلام آباد یونائیٹڈ کے خلاف کھیلے گی۔

تفصیلات کے مطابق پی ایس ایل کے چوتھے سیزن کے پانچویں مرحلے کا تیسرا میچ نیشنل اسٹیڈیم میں کراچی کنگز اور پشاور زلمی کی ٹیموں کے درمیان کھیلا گیا۔

کراچی کنگز کے کپتان عماد وسیم نے ٹاس جیت پر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔


پشاور زلمی کو اچھا آغاز ملا، اوپنر کامران اکمل اور امام الحق نے عمدہ بیٹنگ کی اور 137 رنز کی شراکت داری قائم کی، دونوں بلے بازوں نے کراچی کنگز کے باؤلرز کو گراؤنڈ کے چاروں طرف بہت اچھے طریقے سے کھیلا اور ٹیم کی پوزیشن مستحکم کی، کراچی کنگز کے لیے کولن منرو کا اوور ٹرننگ پوائنٹ ثابت ہوا کیونکہ انہوں نے اننگز کے 14ویں اوور میں کامران اکمل اور پولارڈ کو پویلین کی راہ دکھائی۔

پشاور زلمی کی تیسری وکٹ 166 رنز پر گری جبکہ اس دوران اوپنر امام الحق نے اپنی نصف سنچری بھی مکمل کی، محمد عامر نے اسی اوور میں 171 کے مجموعی اسکور پر امام الحق کو 59 رنز پر دوسرا کلین بولڈ کیا اور سیمی الیون کے اسکور کو روکنے کی کوشش کی، محمد عامر نے وکٹ لینے کے سلسلے کے جاری رکھتے ہوئے اگلے ہی اوور میں سیمی کو بھی پویلین کی راہ دکھائی۔

اننگز کے آخری اوور میں عثمان شنواری نے وہاب ریاض کو پویلین واپس بھیجا جبکہ آخری گیند پر حسن علی رن آؤٹ ہوئے یوں پشاور زلمی کی ٹیم نے مقررہ 20 اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 203 رنز بنائے، کامران اکمل 86 اور امام الحق 59 کے ساتھ نمایاں بلے باز رہے، کراچی کنگز کے باؤلر محمد عامر نے تین کولن منرو نے دو اور عثمان شنواری نے ایک وکٹ حاصل کی۔


کراچی کنگز اننگز

ہدف کے تعاقب میں کراچی کنگز کو آغاز اچھا نہ مل سکا اور کولن منرو صرف تین رن پر آؤٹ ہوئے، انہیں امپائر نے غلط ایل بی ڈبلیو آؤٹ قرار دیا جبکہ ری ویو میں گیند وکٹ کے باہر کی طرف جارہی تھی، بعد ازاں بابر اعظم اور لیونگ اسٹون بالترتیب 13 اور 22 کے مجموعی اسکور پر پویلین روانہ ہوئے۔

ڈنک اور کولن انگرام نے محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے اسکور 65 تک پہنچایا تو  چوتھی وکٹ بھی کر گئی، دوسری طرف انگرام نے جارحانہ انداز میں بیٹنگ جاری رکھی اور نصف سنچری مکمل کی، اگلے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی افتخار احمد تھے جو 87 کے مجموعی اسکور پر پویلین روانہ ہوئے یوں کراچی کنگز کی آدھی ٹیم پویلین لوٹ گئی۔

کولن انگرام چودہویں اوور میں ٹائمل ملز کی گیند پر 37 گیندوں پر چار چھکوں اور 7 چوکوں کی مدد سے 71 رنز کی شاندار اننگز کھیل کرکیچ آؤٹ ہوئے۔

کراچی کنگز کی ساتویں وکٹ 138 کے مجموعی اسکور پر اُس وقت گری جب سہیل خان صرف ایک رن بنا کر پویلین واپس روانہ ہوئے، محمد عامر، عمر خان اور عماد وسیم بالترتیب 140 اور 142 پر آؤٹ ہوئے۔

کراچی کنگز کی جانب سے کولن انگرام 71 اور کپتان عماد وسیم 30 رنز بنا کر نمایاں بلے باز رہے جبکہ زلمی کے حسن علی نے تین ، ثمین گل، ٹائمل ملز اور وہاب ریاض نے دو دو وکٹیں حاصل کیں، پشاور زلمی نے کراچی کنگز کو 61 رنز سے شکست دے کر فتح اپنے نام کی۔

ایلیمنیٹری راؤنڈ

میچ کے ساتھ پاکستان سپرلیگ کا گروپ مرحلہ اختتام پذیر ہوا، کراچی کنگز اب ایلیمنٹری راؤنڈ میں 14 مارچ کو اسلام آباد یونائیٹڈ سے مقابلہ کرے گی، اسی طرح کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور پشاور زلمی کے درمیان 13 مارچ کو مقابلہ ہوگا، فاتح ٹیم فائنل تک رسائی حاصل کرے گی۔

دونوں ٹیموں نے اسکواڈ میں ایک ایک تبدیلی کی تھی کراچی کنگز نے عامر یامین کی جگہ محمد عامر جبکہ پشاور زلمی نے مصباح الحق کی جگہ صہیب مقصور کو ٹیم میں شامل کیا گیا تھا۔

اسکواڈ

کراچی کنگز

عماد وسیم (کپتان)، کولن انگرام (نائب کپتان)،بابر اعظم ، کولن منرو، لیام لیونگ اسٹون، بین ڈنک، افتخار احمد، محمد عامر، سہیل خان، عثمان شنواری، عمر خان

پشاور زلمی

امام الحق، کامران اکمل، عمر امین، صہیب مقصود، لیام ڈاؤسن، کیورن پولارڈ، ڈیرن سیمی (کپتان)، وہاب ریاض، حسن علی، ٹائمل ملز، ثمین گل

کراچی کنگز اور پشاور زلمی دونوں ہی ٹیمیں پلے آف مرحلے تک رسائی حاصل کرچکی ہیں، میزبان ٹیم فتح حاصل کر کے پوائنٹس ٹیبل پر رن ریٹ کی اوسط سے ایک درجہ ترقی کرسکتی تھی۔ میچ سے قبل پوائنٹس ٹیبل پر  پشاور زلمی 12 پوائنٹس کے ساتھ دوسرے جبکہ کراچی کنگز 10 پوائنٹس کے ساتھ چوتھے نمبر پر تھی۔

یاد رہے کہ ایک روز قبل کھیلے جانے والے میچ میں کراچی کنگز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو ایک رن سے شکست دی تھی، عماد اور سیمی الیون جیت کے تسلسل کو برقرار رکھنے کی خواہش مند تھیں۔

ویڈیو دیکھیں: چار سال سے ہار ہار کر تھک گیا ہوں: رانا فواد

قبل ازیں ملتان سلطانز اور لاہور قلندرز کی ٹیموں کے مابین پاکستان سپرلیگ کا 29واں میچ کھیلا گیا جس میں لاہور قلندرز کو ایک بار پھر شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں