The news is by your side.

Advertisement

مسجد نبویؐ کا واقعہ پلانٹڈ نہیں، اچانک ردعمل تھا، فوادچوہدری

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ مسجد نبویؐ کا واقعہ پلانٹڈ نہیں، اچانک ردعمل تھا، پی ٹی آئی کے ورکرز ان چیزوں میں شامل نہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری نے کہا ہے کہ مسجد نبویؐ کا واقعہ پلانٹڈ نہیں، اچانک ردعمل تھا، پی ٹی آئی کے ورکرز ان چیزوں میں شامل نہیں، لوگ آپ کے چہرے پہچانتے ہیں، اس معاملے میں مذہب کو استعمال نہ کریں، ان کا پیرس اور دبئی میں بھی یہی حال ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ عمران خان نے اسلامو فوبیا کیخلاف جو کام کیا اس کا مقابلہ نہیں، آپ کے کردار اور عمران خان کے کردار کا لوگوں کو پتہ ہے، ہم نے سوسائٹی کو بچانا ہے، تقسیم نہیں کرنی۔

انہوں نے کہا کہ سندھ ہاؤس حملہ کیس میں پی ٹی آئی کے رہنماؤں کو سزا ہوگئی اور وہ جیل گئے، لیکن انصارالسلام پارلیمنٹ لاجز آئی اس کے ایک کارکن کو بھی سزا نہیں ہوئی، صاحب اقتدار کو تاریخ سے سبق لینا ہوتا ہے، معاشرے، ملک، سوسائٹی کو تقسیم نہیں کیا جاتا، جوڑاجاتا ہے، قانون سب کیلئےبرابرہوگا تو معاشرے میں تقسیم نہیں ہوگی، اگر سب سے بڑی سیاسی جماعت کو دیوار سے لگائیں گےتو پھر ووٹ اور معاشرہ تقسیم ہوگا۔

سابق وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ ملک میں تقسیم ختم کرنے کا واحد حل چیف الیکشن کمشنر کا استعفیٰ اور فوری انتخابات ہیں، چیف الیکشن کمشنر اپنے عہدے سے استعفیٰ دیں پھر جو چیف الیکشن کمشنر ملک کو قبول ہو وہ تعینات کیا جائے اور نئے الیکشن کمشنر کی تعیناتی کے بعد انتخابات کرائے جائیں، اس کےعلاوہ مسائل کا کوئی حل نہیں۔

پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھا کہ شاہ زین بگٹی کے گارڈ نے قاسم سوری پر حملہ کیا وہ پلانٹڈ تھا، تھانے میں درخواست دے دی ہے، لوگ پہچانے بھی جاسکتے ہیں، ایک شخص سحری کررہا ہو اور اس پر حملہ کردیا جائے یہ ٹھیک نہیں، عدالت کونوٹس لے کر اس پر انسداد دہشتگردی کی دفعہ لگنی چاہیے۔

سابق وفاقی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ یہاں 4 یا 5 لوگ تجزیہ کار بنے ہوئے ہیں، عدالتوں میں لوٹوں کے معاملےپرکوئی کیس نہیں لگ رہا ہے،تاریخیں دی جارہی ہیں لیکن ہر2 گھنٹےبعد لاہور ہائیکورٹ میں حمزہ حلف برداری کا کیس لگ رہا ہے۔

موجودہ حکومت میں شامل زیادہ تر لوگوں کو عقل ہی نہیں، یہ سمجھتے ہیں کہ عوام کی رائے کی کوئی اہمیت ہی نہیں ہے، رمضان میں یوٹیلٹی اسٹورز بند ہوگئےانکو پیسے ہی نہیں مل رہے، کسان رُل گیا ہے، اسے ڈیزل ہی نہیں مل رہا، حکومتی لوگ اتنے ڈرےہوئے ہیں کہ خود گھروں سےنکل نہیں پارہے، اتنی ڈری ہوئی حکومتیں زیادہ دیر چلتی نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں لوڈشیڈنگ بڑھ گئی ہے،اس پر کوئی میٹنگ نہیں ہوئی، ڈیزل بحران بدانتظامی کی ایک مثال ہے، حماداظہر نےشہبازشریف کوکہا27پلانٹس جو بند ہیں ان کی لسٹ دے دیں، لیکن شہباز شریف نے اب تک ان پلانٹس کی لسٹ نہیں دی، ہماری حکومت میں ڈیزل کا 32دن کا ذخیرہ تھا، موجودہ حکومت نے آتے ہی ذخیرےکوختم کردیا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ ہفتے کو لاکھوں لوگ اپنے طور پر باہر نکلے تھے، اس میں کوئی لیڈر نہ تھا، اسلام آباد میں 20لاکھ آدمی ہم جمع کرینگے یہاں بھی لاکھوں لوگوں نے خود آنا ہےہم نے صرف کال دینی ہے، اگر آپ گرفتار بھی کریں گے تو پھربھی کتنے لوگوں کو کرینگے؟

Comments

یہ بھی پڑھیں