The news is by your side.

Advertisement

امپورٹڈ حکومت نے انتقامی کارروائیوں کا آغاز کردیا، شہزاد اکبر

پی ٹی آئی رہنما شہزاد اکبر نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت کی جانب سے انتقامی کارروائیوں کا آغاز کردیا گیا ہے، لیکن ہم کہیں نہیں جارہے اپنےلیڈر عمران خان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما شہزاد اکبر نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امپورٹڈ حکومت کی جانب سے انتقامی کارروائیوں کا آغاز ہوگیا ہے، نام اسٹاپ لسٹ میں اس وقت ڈالا گیا جب کہ عدم اعتماد پر کارروائی مکمل نہیں ہوئی تھی، اور وقت کابینہ تھی نہ حکومت اور وزیراعظم تو نام اسٹاپ لسٹ مٰں کس نے ڈالا۔

ان کا کہنا تھا کہ میں تو اوورسیز پاکستانی بھی نہیں ساری زندگی یہیں رہا ہوں، نام اسٹاپ لسٹ پر ڈالنے کے لیے کوئی کیس ہونا چاہیے، ریکویسٹ کرنے والی کوئی ایجنسی ہونی چاہیے، ڈی جی ایف آئی اےکوبتاناہو گا اسے کس نے یہ آرڈر کیا تھا؟ عدالت ایف آئی اے سے پوچھے، کس کے کہنے پر نام ڈالا ؟

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ ایف اے ٹی ایف میں ابھی آپ کا نام ہے لیکن اسٹاپ لسٹ میں ڈی جی اینٹی کرپشن کا نام بھی ڈال دیا گیا اس کے علاوہ منی لانڈرنگ کیسز لیڈ کرنے والےایف آئی اے ڈائریکٹر کا نام بھی ڈال دیا گیا، وہ سرکاری افسر ہے وہ تو اجازت کےبغیر یوں بھی باہر نہیں جاسکتا، منی لانڈرنگ کی تحقیقات کرنے والے کو تو ڈیکوریٹ کرنا چاہیے تھا۔

پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھا کہ ہم کہیں نہیں جارہے اپنے لیڈر عمران خان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی رہنماؤں شہزاد اکبر اور شہباز گل نے اپنے نام اسٹاپ لسٹ میں ڈالے جانے کے فیصلے کو عدالت میں چیلنج کردیا ہے۔

دونوں رہنماؤں نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر درخواستوں میں موقف اختیار کیا ہے کہ بیرون ملک روانگی پر پابندی خلاف قانون ہے، ہمارے خلاف کوئی مقدمہ نہیں، کوئی الزام تک نہیں۔

مزید پڑھیں: شہزاد اکبر اور شہباز گل نے نام اسٹاپ لسٹ میں شامل کرنے کا فیصلہ عدالت میں چیلنج کردیا

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ درخواست پر سماعت آج کرکے بیرون ملک روانگی پر پابندی ختم کی جائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں