پی ٹی آئی کو چاہیے اعتزاز احسن کو سپورٹ کرے، خورشید شاہ Aitzaz Ahsan
The news is by your side.

Advertisement

پی ٹی آئی کو چاہیے اعتزاز احسن کو سپورٹ کرے، خورشید شاہ

پشاور : پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ پاکستان کو ایسے لیڈر کی ضرورت ہے جو ملک کے مسائل عالمی سطح پر اٹھا سکے اور صدارتی امیدوار کے لئے اعتزازاحسن پر کسی کو اعتراض نہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما خورشید شاہ نے پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان نے کہا تھا دھاندلی ہوئی ہے تو تمام حلقے کھولیں گے۔

سابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی رہنما اعتزاز احسن پر کوئی الزام نہیں ہے اور اعتزازاحسن پسند نہیں مسلم لیگ نواز نے ایسی کوئی بات نہیں کی۔

خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ صدارتی امیدوار کے لئے اعتزازاحسن پر کسی کو اعتراض نہیں، اعتزاز احسن ایک اثاثے کی حیثیت رکھتے ہیں۔

سابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے کا کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کو چاہیئے کہ اعتزاز احسن کی حمایت کرے،

پیپلز پارٹی رہنما کا کہنا ہے کہ پاکستان کو ایسے لیڈر کی ضرورت ہے جو مملکت کے مسائل و معاملات کو عالمی سطح پراٹھا سکے، ہمیں پاکستان کے لیے سوچنا ہے اعتزاز احسن کی سپورٹ کرنی ہے۔

خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان بہتر کام کریں گے تو ہم ان کی مدد کریں گے۔

خیال رہے کہ پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو اور آصف علی زرداری نے پارٹی رہنماؤں سے مشاورت کے بعد صدارتی انتخاب میں اپنا امیدوار لانے کا فیصلہ کیا تھا۔

پی پی پی کے چیئرمین اور آصف زرداری نے اعتزاز احسن کو صدارتی امیدوار نامزد کرنے کی منظوری دی تھی جبکہ خورشید شاہ، شیری رحمان اور قمر زمان کائرہ کو مسلم لیگ ن سمیت دیگر اتحادی جماعتوں سے رابطے کرنے کا ٹاسک دیا تھا۔

یاد رہے کہ پاکستان کی حکمران جماعت تحریک انصاف نے صدراتی انتخاب کے لیے ڈاکٹر عارف علوی کو اپنا امیدوار نامزد کیا ہے۔

واضح رہے کہ صدر مملکت ممنون حسین کے عہدے کی مدت 8 ستمبر 2018 کو پوری ہورہی ہے، اُس سے قبل نئے صدر کے انتخاب کے لیے 4 ستمبر کو پولنگ کا انعقاد کیا جائے گا۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے صدارتی انتخاب کے لیے نوٹی فکیشن جاری کردیا جس کے مطابق امیدوار 27 اگست کو دوپہر 12 بجے تک اپنے کاغذاتِ نامزدگی جمع کراسکتے ہیں۔

صدارتی انتخاب کے لیے جمع کروائے جانے والے امیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال 29 اگست کی صبح 10 بجے ہوگی جبکہ 30 اگست دن 12 بجے تک امیدوار اپنی نامزدگی واپس لے سکیں گے جس کے بعد حتمی فہرست آویزاں کی جائے گی۔

پی پی پی کے چیئرمین اور آصف زرداری نے اعتزاز احسن کو صدارتی امیدوار نامزد کرنے کی منظوری دی تھی جبکہ خورشید شاہ، شیری رحمان اور قمر زمان کائرہ کو مسلم لیگ ن سمیت دیگر اتحادی جماعتوں سے رابطے کرنے کا ٹاسک دیا تھا۔

یاد رہے کہ پاکستان کی حکمران جماعت تحریک انصاف نے صدراتی انتخاب کے لیے ڈاکٹر عارف علوی کو اپنا امیدوار نامزد کیا ہے۔

واضح رہے کہ صدر مملکت ممنون حسین کے عہدے کی مدت 8 ستمبر 2018 کو پوری ہورہی ہے، اُس سے قبل نئے صدر کے انتخاب کے لیے 4 ستمبر کو پولنگ کا انعقاد کیا جائے گا۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے صدارتی انتخاب کے لیے نوٹی فکیشن جاری کردیا جس کے مطابق امیدوار 27 اگست کو دوپہر 12 بجے تک اپنے کاغذاتِ نامزدگی جمع کراسکتے ہیں۔

صدارتی انتخاب کے لیے جمع کروائے جانے والے امیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال 29 اگست کی صبح 10 بجے ہوگی جبکہ 30 اگست دن 12 بجے تک امیدوار اپنی نامزدگی واپس لے سکیں گے جس کے بعد حتمی فہرست آویزاں کی جائے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں