The news is by your side.

Advertisement

پنجاب اسمبلی میں شور شرابہ، تین مسلم لیگی ارکان کی رکنیت معطل

لاہور: پنجاب اسمبلی میں شورشرابہ اورڈپٹی اسپیکرسےتلخ کلامی وبحث ہوئی،  ڈپٹی اسپیکرنےمسلم لیگ ن کےمزید2ارکان اسمبلی کی رکنیت معطل کردی۔

تفصیلات کے پنجاب اسمبلی میں ڈپٹی اسپیکر سے شور شرابے اور تلخ کلامی کے باعث اشرف رسول کے بعد عظمیٰ بخاری اور عبد الرؤف کی رکنیت بھی معطل کردی گئی۔ رکنیت معطلی کافیصلہ ڈپٹی اسپیکرکی زیرصدارت اجلاس میں کیاگیا۔

ڈپٹی اسپیکر کے زیرصدارت ہونے والے اجلاس میں صمصام بخاری،محسن لغاری اورمخدوم عثمان سمیت دیگرارکان نےشرکت کی۔ عظمیٰ بخاری سےمتعلق عنایت اللہ لک نےفوٹیج دیکھنےکےبعدآگاہ کیا اور کہا کہ مسلم لیگ ن کےمزیدارکان نےبھی ہنگامہ آرائی کی، کم سےکم 4ارکان کی رکنیت معطل کی جانی چاہیے۔

ڈپٹی اسپیکرنےمسلم لیگ ن کے 3ارکان کی معطلی کانوٹیفکیشن جاری کردیا، معطلی کا شکار   ارکان ایوان کی کارروائی میں حصہ لےسکیں گےنہ ہی اسمبلی حدودمیں آسکیں گے۔

نوٹی فکیشن کے مطابق مسلم لیگ ن کے ارکان کو دوران اجلاس دخل اندازی سےروکامگروہ باز نہ آئے، جس کے سبب رولزاورپروسیجرکےرول210کےتحت ارکان کی رکنیت معطل کی گئی۔

رکنیت معطلی کے خلاف مسلم لیگ ن کی صوبائی صوبائی پارلیمانی پارٹی کی کور کمیٹی کااجلاس منعقد ہوا جس میں پارٹی کے  3ارکان کی رکنیت معطلی کےبعدکی صورتحال کاجائزہ لیا گیا۔

ذرایع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں بلدیاتی بل پربھی مشاورت  کی گئی اورمسلم لیگ ن  جلد آئندہ کےلائحہ عمل کااعلان کرےگی۔

اس حوالے سے معطل ہونے والے مسلم لیگی رکنرکن پنجاب اسمبلی عبدالرؤف کا میڈیا سے  گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اسپیکرکسٹوڈین آف دی ہاؤس ہوتاہےآج اسپیکرنےہمیں بات ہی نہیں کرنےدی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ عظمیٰ بخاری سےمتعلق غلط الفاظ استعمال کیےگئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں