The news is by your side.

Advertisement

اسپیکر پنجاب اسمبلی پر تشدد، سربراہ قاف لیگ نے سیکیورٹی پر سوال اٹھادیا

اسلام آباد: سربراہ مسلم لیگ (ق) کا کہنا ہے کہ ایوان میں اسپیکر کی جان محفوظ نہیں وہاں عام آدمی کیا توقع رکھے؟

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ق) کے سربراہ چوہدری شجاعت نے کہا کہ آج جو پنجاب اسمبلی میں ہوا وہ افسوسناک ہے، جس طرح پرویزالہیٰ کو زخمی کیا گیا یہ قابل افسوس ہے۔

چوہدری شجاعت نے الزام عائد کیا کہ پولیس کے ایوان میں آنے کےبعد ن لیگ کی حوصلہ افزائی ہوئی، انہوں نے سوال کیا کہ پولیس کا کام صرف اپوزیشن ،ڈپٹی اسپیکر اور ان کے حامیوں کاتحفظ تھا، ایوان میں اسپیکر کی جان محفوظ نہیں وہاں عام آدمی کیا توقع رکھے؟۔

یہ بھی پڑھیں: پرویز الٰہی نے حملہ کرنے والے کا نام بتادیا

سربراہ قاف لیگ کا مزید کہنا تھا کہ میں اور چوہدری وجاہت اسمبلی جا رہےہیں، ہم مال روڈ کے قریب پہنچ گئے ہیں، ہمیں بتایا جارہا ہےکہ آگے راستہ بندہے۔

واضح رہے کہ آج وزیراعلیٰ کے انتخاب سے قبل پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی کے دوران ق لیگ کے بزرگ رہنما پرویز الہٰی زخمی ہوگئے تھے، ہنگامہ آرائی کے دوران ن لیگی اراکین نے پرویز الہٰی کو دھکے اور تھپڑ مارے۔

پرویز الہٰی کو تشدد کے بعد اسمبلی میں آکسیجن بھی لگایا گیا، اور فوٹیج میں ان کی کلائی پر پٹی بندھی دیکھی جا سکتی ہے، انھوں نے کہا کہ میرا بازو توڑ دیا گیا ہے، رانا مشہود مجھ پر چڑھا تھا، انھوں نے اتنا مارا کہ مجھے ہوش ہی نہیں رہا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں