The news is by your side.

Advertisement

پانی کا مسئلہ ، قائم علی شاہ بھی میدان میں آگئے، حکومت پر کڑی تنقید

کراچی : سابق وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کا کہنا ہے کہ سندھ میں پانی کا مسئلہ بڑھتا جارہا ہے، پانی نہ ملنےسے کاشتکار سراپااحتجاج ہیں ، سندھ کو بنجر کرنے کی کوشش کی گئی تومرکزی حکومت بھی بنجر ہو جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ملک کو 70 فیصد سے زائد ریوینیو دینے والے سندھ کا وفاق نے پانی بند کر دیا، سندھ میں پانی کا مسئلہ بڑھتا جارہا ہے، وفاق کوئی تدارک نہیں کررہا۔

قائم علی شاہ کا کہنا تھا کہ سندھ کا پانی روک کرزراعت کو تباہ کرناملک کو کمزور کرنےکی سازش ہے، نیازی حکومت ارسا جیسے ادارے کو استعمال کرکے حالات خراب کرنا چاہتی ہے۔

سابق وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ پیپلزپارٹی علاقائی پارٹی نہیں ملک کی سب سےبڑی جماعت ہے، بلاول بھٹو ،آصف زرداری کی قیادت میں پی پی کی جدوجہد جاری ہے، دریائے سندھ پر سب سے زیادہ حق سندھ کا ہے، پنجاب میں زیرزمین پانی میٹھا ہے اورسندھ کا90 فیصد پانی کڑوا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ کا انحصار زراعت پرہے، پانی نہ ملنےسے کاشتکار سراپااحتجاج ہیں، صوبے کووفاق مختلف شعبوں میں نظر انداز کررہا ہے، پانی سندھ کیلئےزندگی ہے پانی نہ ملا تو سندھ بنجر بن جائے گا۔

قائم علی شاہ نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی حکومت یہ نہ سمجھے کہ وہ ناجائز فائدہ اٹھائے گی، سندھ کوبنجرکرنےکی کوشش کی گئی تومرکزی حکومت بھی بنجر ہو جائے گی، وفاق کا سندھ کے ساتھ یہ رویہ رہا تو پھر وفاق بھی نہیں چل سکے گا۔

سابق وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ سندھ کےمؤقف کوسامنےرکھتے ہوئے جلد پانی کا مسئلہ حل کرے، منتخب نمائندوں کیساتھ بیٹھ کر1991والے پانی معاہدےسے آگے بڑھنا چاہیے، 1991آبی معاہدےپر سندھ کے عوام بالکل انکاری ہے، وفاق کو چاہیے کہ سندھ کا جائز حق سندھ کو دیا جائے۔

انھوں نے کہا کہ وفاق کے رویوں پر سندھ کی عوام سلیکٹڈ سے سخت ناراض ہے، غیر قانونی لنک کینال کیوں ،کس کی اجازت سےکھولے جارہے ہیں؟ وفاق کے ڈاکو سندھ کا پانی چوری بھی کرتے اور روتے بھی ہیں، پیپلزپارٹی کا سینئر کارکن ہوں ہر فیصلے کے ساتھ کھڑا ہوں اور رہوں گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں