ہفتہ, مئی 25, 2024
اشتہار

قمر باجوہ کو غدار نہیں کہا جا سکتا، مونس الٰہی

اشتہار

حیرت انگیز

لاہور : مسلم لیگ ق کے مرکزی رہنما مونس الٰہی کا کہنا ہے کہ سابق آرمی چیف جنرل باجوہ صاحب کو غدار نہیں کہا جاسکتا، ق لیگ نے ان کے کہنے پر ہی پی ٹی آئی کا ساتھ دیا۔

تفصیلات کے مطابق ق لیگ کے مرکزی رہنما مونس الٰہی نے ایک انٹرویوں میں کہا ہے کہ جو ہٹ گیا وہ برا ہے میں اس سوچ کےخلاف ہوں، بحث کرلیں باجوہ صاحب کیسے غدار ہوگئے،انہوں نے پی ٹی آئی کیلئے کیا کیا نہیں کیا۔

مونس الٰہی نے سوال کیا جب باجوہ صاحب نے دریا کا رخ پی ٹی آئی کی طرف موڑ دیا تب وہ صحیح تھے؟

- Advertisement -

ق لیگی رہنما نے بتایا کہ جب آفر آئی تو سابق آرمی چیف نے ہمیں کہا تھا پی ٹی آئی کی طرف ہو جائیں، اس رائے کے بعد میں نے والد صاحب کو کہا کہ اس طرف ہونا چاہیے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ سازش میں باجوہ صاحب کا ہاتھ ہوتا تو وہ ہمیں کیوں پی ٹی آئی کی طرف ہونے کا کہتے۔

مونس الٰہی نے اسٹیبلشمنٹ سے رابطے کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ کی نئی قیادت کے ساتھ کوئی رابطہ نہیں ہے۔

ق لیگ کے مرکزی رہنما کا کہنا تھا کہ ہماری چوائس ہے بجٹ دیکر جائیں، عمران خان اسمبلی تحلیل کرنا چاہیں تو تیار ہیں۔

یاد رہے گذشتہ روز چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان سےوزیراعلیٰ پنجاب پرویزالہٰی نے زمان پارک میں ملاقات کی تھی، ملاقات میں سابق وفاقی وزیر مونس الٰہی اور ایم این اے حسین الٰہی بھی موجود تھے۔

ملاقات میںوزیراعلیٰ پنجاب پرویز الہیٰ نے کہا تھا کہ عمران خان کے کہنے پر پنجاب اسمبلی تحلیل کرنے میں تاخیر نہیں ہوگی، پنجاب اسمبلی عمران خان کی امانت ہے اور یہ انہیں دے دی،ہم عمران خان کے ہر فیصلے کا ساتھ دیں گے،ہم جس کے ساتھ چلتے ہیں، اس کا پورا ساتھ دیتے ہیں۔

بعد ازاں ملاقات میں شریک چوہدری مونس الہیٰ نے ٹوئٹ کیا تھ کہ آج ہماری عمران خان سے ملاقات ہوئی ہے، ملاقات میں عمران خان کو یقین دہانی کرا دی ہے کہ یہ وزارت اعلٰی عمران خان کی امانت ہے، عمران خان جب چاہیں گے پنجاب اسمبلی تحلیل ہو جائے گی۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں