The news is by your side.

Advertisement

قندیل بلوچ قتل کیس: عثمان خالد بٹ نے عدالت سے رجوع کرلیا

پاکستان کے معروف اداکار عثمان خالد بٹ نے ماڈل قندیل بلوچ کے قتل کیس میں عدالتی فیصلے کو چیلنج کر دیا ہے۔ اداکار نے عدالتی فیصلے پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔

عثمان خالد بٹ نے قتل کیس میں نامزد ماڈل قندیل بلوچ کے بھائی وسیم کی بریت کا فیصلہ سماجی کارکن بیرسٹر خدیجہ صدیقی کے ذریعے سپریم کورٹ میں آئینی درخواست دائر کر دی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بیرسٹر خدیجہ صدیقی نے آئینی  درخواست کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ عثمان خالد بٹ نے ماڈل کے بھائی کی بریت سپریم کورٹ میں چیلنج کی ہے، کیس مشکل ہے تاہم مثال ضرور قائم کرنی چاہیے۔

واضح رہے کہ اداکار عثمان خالد بٹ نے قندیل بلوچ قتل کیس میں عدالتی فیصلے پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ عدالتی حکم نامے کو منظر عام پر لایا جائے تا کہ ہمیں بھی علم ہو کہ مرکزی ملزم وسیم نے عمر قید کی اپیل کیسے جیتی، جب ملزم اپنے جرم کا اعتراف کرچکا تو اسے رہا کرنے کی کیا تُک ہے؟

عثمان خالد بٹ نے مزید کہا تھا کہ ہم اس وقت ایک اعلیٰ سطحی اور ناقابل یقین حد تک سفاکانہ قتل کے مقدمے کے اختتامی مراحل میں ہیں، اس مرحلے میں ایسا فیصلہ آنا انصاف کے نظام پر سوالیہ نشان ہے۔

اداکار کا کہنا تھا کہ یہ پہلی بار نہیں ہوا کہ گھناؤنے جرائم کی سزاؤں میں کمی یا اسے ختم کیا گیا ہو، ہمارے عدالتی نظام میں ایسی خامیاں اب بھی کیوں موجود ہیں جن کے تحت قاتل آخر میں آزاد گھوم پھر سکتے ہیں؟

خیال رہے کہ 14 فروری کو لاہور ہائی کورٹ نے ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس کے مرکزی ملزم وسیم کو بری کر دیا تھا۔ عدالت نے ملزم وسیم کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔

لاہور ہائی کورٹ ملتان بنچ میں ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس میں مرکزی ملزم کی والدہ نے عدالت میں راضی نامہ جمع کرایا تھا جس پر لاہور ہائی کورٹ ملتان بینچ نے فیصلہ سناتے ہوئے مرکزی ملزم بھائی وسیم کو بری کردیا۔

یاد رہے 27 ستمبر کو ملتان کی عدالت نے اداکارہ قندیل بلوچ قتل کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے مرکزی ملزم اورمقتولہ کے بھائی وسیم کو عمرقید کی سزا سنائی تھی جبکہ مفتی عبدالقوی سمیت چارملزمان کوعدم ثبوت کی بناپربری کر دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں