اسکولوں میں قرآنی تعلیم کو لازمی قرار دینے کیلئےکوشاں ہیں، بلیغ الرحمان -
The news is by your side.

Advertisement

اسکولوں میں قرآنی تعلیم کو لازمی قرار دینے کیلئےکوشاں ہیں، بلیغ الرحمان

اسلام آباد : وفاقی وزیرتعلیم انجینئر محمد بلیغ الرحمان نے کہا ہے کہ حکومت ملک بھر کےتمام سرکاری اسکولوں میں قرآنی تعلیم کو لازمی قرار دیے جانے کے لیے کوششیں کررہی ہے۔

اس مرحلے کا آغاز تمام صوبوں سے بین الصوبائی وزراء تعلیم کی کانفرنس کے پلیٹ فارم پر مشاورت کے بعد شروع کیا گیا ہے۔

الہادی انٹرنیشل اسکول کے زیر اہتمام چوتھی سالانہ کانفرس کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئےوفاقی وزیربرائے تعلیم بلیغ الرحمان نے کہا کہ قرآن کی تعلیم کو بہت جلد ملک بھر کے تمام سرکاری اسکولوں میں دسویں کلاس تک لازمی کیاجائے گا۔

پہلی جماعت سے پانچویں جماعت تک ناظرہ قرآن کی تعلیم دی جائے گی جبکہ چھٹی جماعت سے دسویں جماعت تک کے طالب علموں کو سرکاری اسکولوں میں قرآن کی تعلیم ترجمے کے ساتھ دی جائے گی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ یہ بچے ہمارے ملک کا قومی اثاثہ ہیں۔ ہمیں ملکی وسائل کو بہترین اندازمیں بروئے کارلاتے ہوئے انہیں معاشرے کا اچھا انسان بنانا ہے تاکہ یہ ملک کی ترقی میں اہم کردار ادا کرسکیں۔

وفاقی وزیرکا مزید کہنا تھا کہ تعلیم اور تحقیق دونوں ہمارے مذہب میں ضروری ہیں، ہمیں نصاب پر انحصار کرنے کے ساتھ ساتھ بچوں کو تحقیق کے میدان میں حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت ہے تاکہ دیگر مضامین میں نئے خیالات دریافت کئے جاسکیں۔

پاکستان میں تعلیم کے شعبے میں بہتری آرہی ہے اور ہم سب کو مل کر اسے مزید بہتر بنانا ہے۔ اس موقع پر وفاقی وزیر نے نجی اسکولوں کے کردار کوسراہتے ہوئے کہا کہ نجی اسکول تعلیم کے شعبے میں نمایاں خدمات انجام دے رہے ہیں جو قابل تعریف ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں