The news is by your side.

Advertisement

نامورناول نگار قرۃ العین حیدر کو بچھڑے8برس بیت گئے

ادیب، افسانہ نگار، مترجم اور سب سے بڑھ کر ناول نگاری کو نئی جہت سے آشنا کرنے والی قرہ العین حیدر کو بچھڑے آٹھ برس بیت گئے۔

انیس سو ستائیس میں اتر پردیش کے شہر علی گڑھ میں پیدا ہو نے والی قرۃ العین حیدر کا خاندان تقسیم ہند کے بعد پاکستان آیا لیکن بعد میں انہوں نے ہندوستان میں رہنے کا فیصلہ کیا۔ انہیں شہرت کی بلندیو ں پر پہنچانے والے نا ول “آگ کا دریا” کو اردو ادب میں کلا سیکی حیثیت حا صل ہے۔

قرۃ العین حیدر نہ صرف ناول نگاری بلکہ اپنے افسانوں اور بعض مشہور تصانیف کے ترجموں کے لیے بھی جانی جاتی ہیں۔

ان کے مشہور ناولوں میں میرے بھی صنم خانے، سفینۂ غمِ دل، آگ کا دریا، آخرِ شب کے ہم سفر، گردشِ رنگِ چمن، کارِ جہاں دراز ہے اور چاندنی بیگم شامل ہیں، ان کے سبھی ناولوں اور کہانیوں میں تقسیم ہند کا درد صاف دکھتا ہے۔

انہوں نے جدید ناول کو کہانی بیان کرنے کا جو انداز دیا اس نے جدید ناول کو کلاسیکی مقام پر پہنچا دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں