The news is by your side.

Advertisement

بھینسیں فروخت کرنا جرم بن گیا، بھارت میں دو مسلمانوں کو پھانسی دے دی گئی

رانچی : بھارت میں بھینسیں فروخت کرنے پر دو مسلمانوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق جمہوریت کے نام نہاد علم بردار بھارت میں ہندو انتہاء پسندوں کی مسلمان دشمن کارروائیاں عروج پر پہنچ گئیں، اقلیتوں کا جینا حرام کردیا۔

گزشتہ روز ریاست جھاڑکھنڈ کے ضلع لتیہار کے بلومتھ جنگل میں ہندو انتہا پسندوں نے محمد مظلوم اور آزاد خان الیاس ابراہیم نامی مسلمان بھینسوں کے بیوپاریوں کو اس وقت پکڑلیا جب وہ جمعہ کو لگنے والی منڈی میں بھینسیں فروخت کرنے جارہے تھے۔

دونوں افراد کو ہندو انتہا پسندوں نے پکڑ کر بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا اور پھر ہاتھ پاؤں باندھ کر پھانسی پر لٹکادیا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی دہلی سے متصل علاقے دادری میں گائے کاگوشت کھانے کی افواہ پر ایک مسلمان کو قتل کردیا گیا تھا۔

رات کے وقت ہندوؤں کے مشتعل ہجوم نے محمد اخلاق اور ان کے بیٹے پر حملہ کیا تھا، جس سے اخلاق احمد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں