The news is by your side.

Advertisement

مردہ خانوں میں لاشوں سے زیادتی کرنے والا جنسی درندہ بےنقاب، تہلکہ خیز انکشافات

لندن: برطانیہ میں دو خواتین کا قتل اور اسپتالوں کے مردہ خانوں میں کئی لاشوں سے زیادتی کرنے والا شخص الیکٹریشن نکلا، تہلکہ خیز انکشافات ہوئے ہیں۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق برطانوی پولیس دو خواتین کو قتل اور 100 کے قریب لڑکیوں کی لاشوں سے زیادتی کرنے والے ملزم ڈیوڈ فلر تک پہنچ گئی، اس گھناؤنے فعل کے مرتکب شخص کو بہت مشکل سے تلاش کیا گیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ پولیس نے ملزم کو تلاش کرنے کے لیے تقریباً 2 ملین پاؤنڈ کی خطیر رقم خرچ کی۔

67 سالہ ڈیوڈ فلر کو گزشتہ برس دسمبر میں گرفتار کیا گیا تھا۔ فوٹو: اسکائی نیوز

خیال رہے کہ 67 سالہ ڈیوڈ فلر کو 1987 میں قتل ہونے والی دو خواتین کے کیس میں ڈی این اے کی مدد سے گزشتہ برس دسمبر میں گرفتار کیا گیا تھا، ملزم پر مقدمہ چلا تو حیران کن انکشافات سامنے آئے۔

تحقیقات کے دوران یہ بھی پتا چلا کہ اس نے 9 سالہ بچی کی لاش سے بھی زیادتی کی۔ کرمنل ریکارڈ ہونے کے باوجود ڈیوڈ فلر کو اسپتال کے ہر حصے میں جانے کی اجازت تھی۔

ملزم نے کئی اسپتالوں میں الیکٹریشن کا کام کیا، اس کے موبائل سے ہزاروں غیراخلاقی تصاویر اور ویڈیوز بھی برآمد ہوئیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں