The news is by your side.

Advertisement

سائبیریا سے آئے نایاب مہمان پرندوں کا سکھر میں شکار

سکھر: روس کے سرد ترین علاقے سائبیریا سے آئے ہوئے نایاب مہمان پرندوں کا سکھر میں بے دردی سے شکار ہونے لگا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سکھر میں شکاریوں نے سائبیریا کے نایاب مہمان پرندوں کا شکار شروع کر دیا ہے، لنگھ جھیل قمبر پر غیر قانونی طور پر مہمان پرندوں کا شکار جاری ہے۔

محکمہ وائلڈ لائف افسران مبینہ طور پر رشوت کے عوض خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں، جس پر سول سوسائٹی نے نایاب پرندوں کی نسل کشی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کر دیا ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق محکمہ وائلڈ لائف کے افسران اور ریڈ پارٹی انچاج نے مبینہ طور پر رشوت لے کر شکاریوں کو چھوٹ دی ہوئی ہے، شکاری سائبیریا سے آئے نایاب مہمان پرندوں کا جھیلوں پر پہنچتے ہی شکار کر رہے ہیں۔

سول سوسائٹی کا کہنا ہے کہ سکھر میں شکار کیے گئے پرندے بیوپاری کو فروخت کیے جا رہے ہیں، شکار سے نایاب پرندوں کی نسل کشی ہو رہی ہے، جس کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔

واضح رہے کہ ماضی میں بھی پاکستان کے مختلف علاقوں میں دیگر ممالک سے موسم سرما میں آنے والے مہمان پرندوں کا بے دردی سے شکار ہوتا رہا ہے، جس کے لیے حکومت کی جانب سے کوئی حکمت عملی اختیار نہیں کی گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں