The news is by your side.

حقیقی آزادی مارچ، پولیس کا پینٹ، پیپر اور پینسل گنز کے استعمال کا منصوبہ تیار

وفاقی پولیس نے پی ٹی آئی کے حقیقی آزادی مارچ سے نمٹنے کے لیے پینٹ گن، پیپر گن اور پینسل گن کے استعمال کا منصوبہ تیار کر لیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق وفاقی پولیس نے پاکستان تحریک انصاف کے حقیقی آزادی مارچ سے نمٹنے کے لیے پینٹ گن، پیپر گن اور پینسل گن کے استعمال کا منصوبہ تیار کرلیا ہے اور اس مقصد کے لیے 40 ہزار گنز اور ساٹھ 60 ہزار پینٹ اور پیپر گولیاں بھی جمع کر لی گئی ہیں۔

اس حوالے سے پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پیپر گنز سے مارچ کے شرکا کو منتشر کرنے میں مدد ملے گی اور 100 میٹر کے اندر تک موجود شرکا کو نشانہ بنایا جاسکے گا۔

پولیس کے مطابق پیپر گن کی گولی لگنے سے گیس نکلتی ہے جو انسان کو لگتے ہی اس کے جسم میں شدید خارش شروع ہوجاتی ہے اور یہ خارش کپڑے تبدیل کرنے پر ہی ختم ہوتی ہے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پینٹ گنز سے مارچ کے شرکا کی نشاندہی کی جائے گی اور اس کے ذریعے شرکا کے کپڑوں پر رنگ کا نشان لگ جائے گا جس کے بعد ان کی گرفتاری میں آسانی ہوگی۔

پولیس حکام نے یہ بھی بتایا کہ پینٹ گنز سے مارچ کے شرکا کی گاڑیوں کو بھی روکا جا سکے گا اور اس کے دو فائر سے ہی گاڑی کی ونڈ اسکرین رنگ دار ہوجائے گی جس کے بعد ڈرائیور گاڑی نہیں چلا سکے گا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ پینسل گنز کے فائر سے روشنی نکلتی ہے جو پولیس کے دوسرے گروپ کیلیے سگنل ہوتا ہے، پیپر گنز صرف افسران کو دی جائے گی تاکہ وہ آپس میں رابطے میں رہ سکیں۔
پولیس حکام نے بتایا کہ پیپر گنز آرمی کے بھی زیر استعمال ہوتی ہے۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کی زیر قیادت حقیقی آزادی مارچ لاہور سے شروع ہوا تھا جس کا گزشتہ شب گوجرانوالہ میں قیام ہوا تھا، آج پانچویں روز مارچ آگے کی جانب پیش قدمی کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں