The news is by your side.

Advertisement

آکسفورڈ یونیورسٹی کے کئی سو سال پرانے گمشدہ کالج کی باقیات دریافت

ماہرین آثار قدیمہ نے تقریباً 500 سال قبل ترک کی گئی آکسفورڈ یونیورسٹی کے گمشدہ کالج کی باقیات دریافت کرلیں۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق 1435 میں قائم ہونے والا سینٹ میریز کالج بشمکل 100 سال تک قائم رہا، اس کالج کو آگسٹینین کینن کے مطالعے کے مرکز کے طورپر بنایا گیا تھا۔

لیکن التوا کی وجہ سے تعمیر میں مشکلات آئیں بالآخر 1520 کی دہائی میں ہینری ہشتم کے چیف مشیر کارڈِنل وولسے نے مداخلت کی۔

جس کے بعد کام تیزی سے بڑھا لیکن پھرعمارت ٹوٹ پھوٹ گئی اور جلد ہی 1536 سے 1541 کے درمیان ہینری ہشتم کے گرجوں اور خانقاہوں کو بند کرانے کے حکم کے نتیجے میں زبوں حالی کا شکار ہوگئی۔

The remains of Oxford University's so-called 'lost college' have been uncovered by archaeologists nearly 500 years after the building was abandoned

ماہرین کا ماننا ہے کہ انتہائی بڑی عمارت کی ایک دیوار کو سہارا دینے کے لیے چونے کی بڑی بنیاد موجود ہے۔

یہ ان کئی کیتھولک مذہبی فیسلیٹیز میں سے ایک ہے جن کو 1530 کی دہائی میں ہینری ہشتم کے خانقاہوں کے بند کرنے کے درمیان لُوٹا یا تباہ کیا گیا۔

A massive limestone foundation is believed to have supported a wall to a very significant stone building. Experts say it likely belonged to one of the buildings that formed St Mary's College, which became known as 'Oxford's lost college' because of its relative obscurity, possibly the south range of the cloister

ٹیوڈور کی بادشاہت میں ایسا انگلش چرچ کو کیتھولک چرچ سے الگ کرنے کے لیے کیا گیا تھا کیوں کہ وہ کیتھرین آف ایراگون سے ازدواجی رشتہ ختم کرنا چاہتا تھا، اس نے کسی بیٹے کو جنم نہیں دیا تھا جو بادشاہت کا جانشین ہوتا۔

پوپ نے مسلسل شادی کی منسوخی کو مسترد کیا لہٰذا ہینری ہشتم نے خود مختار چرچ آف انگلینڈ بنایا، جس میں وہ سربراہ تھا اور ان تمام گرجوں کو بند کرنے کا حکم دیا تھا گیا جن کی وفاداریاں رُوم کی پاپایت کے ساتھ تھیں۔

The college was one of many Catholic religious facilities to be looted or destroyed during Henry VIII's dissolution of the monasteries in the 1530s. Archaeologists excavating the site ahead of the planned erection of 30 student flats have now found part of the lost college's building works

Comments

یہ بھی پڑھیں