The news is by your side.

Advertisement

مصالحے کے ذریعے گاہک کو ’قتل‘ کرنے والے ریستوران مالک کو سزا

لندن: برطانیہ میں ایک ہندوستانی ریستوران کے مالک کو ایک گاہک کو قتل کرنے کے جرم میں 6 سال کے لیے جیل بھیج دیا گیا۔ اس نے ایک نٹ الرجی کے مریض گاہک کو مونگ پھلی والا چکن تکہ مصالحہ بیچا تھا۔

مقتول ولسن 2014 میں اپنے باتھ روم میں مردہ پایا گیا تھا اور اس کے پوسٹ مارٹم سے معلوم ہوا کہ اسے الرجی کا شدید دورہ پڑا تھا۔

r2

ولسن نے مصالحہ خریدتے وقت ’نٹس‘ نہ شامل کرنے کی ہدایت کی تھی لیکن اس کی موت کے بعد مصالحے کا تجزیہ کیا گیا تو اس میں نٹس کے اجزا پائے گئے۔

ولسن کی موت سے 3 ہفتے قبل بھی محمد زمان کے ریستوران میں نٹس الرجی کی شکار 17 سالی مریضہ کو باوجود اس یقین دہانی کے، کہ اس کے آرڈر میں نٹس شامل نہیں ہیں، طبیعت خراب ہونے پر اسپتال منتقل کرنا پڑا تھا۔

r1

پولیس کے مطابق نیویارک کا رہائشی 53 سالہ محمد زمان اس علاقے میں 6 ریستورانوں کا مالک ہے۔ وہ نہ صرف پیسے بچانے کے لیے کم قیمت غذائی اجزا استعمال کرتا ہے بلکہ اس نے غیر قانونی طور پر رہائش پذیر اور نا اہل افراد کو ملازم رکھا ہوا ہے۔

جج کا کہنا ہے کہ محمد زمان کو دی جانے والی سزا کیٹرنگ انڈسٹری کے لیے ایک تنبیہ ہے کہ وہ اپنے گاہکوں کا ہر صورت میں خیال رکھیں اور ان کی حفاظت کو اپنی اولین ترجیح بنائیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں