The news is by your side.

Advertisement

ریو اولمپکس 2016: صحافیوں کی بس پر فائرنگ، 2 صحافی زخمی

ریو ڈی جنیرو: برازیل میں جاری ریو اولمپکس 2016 میں نامعلوم افراد کی جانب سے صحافیوں کی بس پر فائرنگ کردی گئی جس سے بس کے شیشے ٹوٹ گئے۔ فائرنگ سے 2 صحافی معمولی زخمی ہوگئے۔

حکام کے مطابق بس میں سوار صحافی باسکٹ بال میچ کی کوریج کے بعد واپس آرہے تھے۔ بس میں کل 12 افراد سوار تھے جن میں 4 مقامی اور 8 غیر ملکی صحافی شامل تھے۔ زخمی ہونے والا ایک ترک اور ایک بیلا روس کا صحافی ہے جنہیں شیشہ لگنے سے زخم آئے ہیں۔

rio-2

واقعہ کے بعد فوری طور پر بس کو پولیس کے حفاظتی دستے میں میڈیا سینٹر پہنچا دیا گیا۔

ریو 2016: فضائی و آبی آلودگی کے باعث کھلاڑیوں کی صحت کو سخت خطرہ *

انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریو ڈی جنیرو میں ڈیوڈورو سے بارا تک کے سفر کے دوران بس پر کوئی چیز پھینکی گئی جس سے بس کے شیشے ٹوٹے تاہم سیکیورٹی ایجنسیاں واقعہ کی تحقیقات کر رہی ہیں اور ان کی رپورٹ کے بعد ہی مزید بات کی جاسکتی ہے۔

rio-3

بس میں سوار ارجنٹینا کے ایک صحافی کے مطابق جب یہ واقعہ ہوا تو سب بس کے فرش پر لیٹ گئے اور خود کو بچانے کی ہر ممکن کوشش کی۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اندازہ نہیں کر سکے کہ بس کو نشانہ بنانے والی گولیاں تھیں یا پتھر۔

ایرانی دستے کی معذور قائد لوگوں کی توجہ کا مرکز *

واضح رہے کہ اولمپکس کے انعقاد سے قبل ہی منتظمین کو دہشت گردانہ حملوں سے خبردار کیا جا چکا ہے۔ اس سے ایک روز قبل ڈیوڈورا کے ایک ہوٹل میں عارضی طور قائم میڈیا روم پر بھی فائرنگ کی گئی اور ایک گولی چھت کو توڑتی ہوئی ایک میڈیا کارکن کے قریب گری۔

rio-4

اسی روز مینز سائیکل روڈ ریس میں فنشنگ لائن کے قریب حکام نے دھماکہ خیز مواد برآمد کیا۔

ایک اور واقعہ میں کوپکے بانا پیلس ہوٹل کے قریب مشکوک پیکٹ دھماکے سے پھٹ گیا۔ واقعہ میں کوئی نقصان نہیں ہوا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں