The news is by your side.

Advertisement

کرونا کا خطرہ: جاپان سے ملائیشیا واپسی، شہری پیدل گھر پہنچ گیا

کوالالمپور: کروناوائرس کے خطرے کے پیش نظر ایک شہری جاپان سے ملائیشیا آیا اور ایئرپورٹ سے 3 دن کا طویل سفر پیدل طے کرکے گھر پہنچ گیا، اس اقدام نے لوگوں کو ورطہ حیرت میں مبتلا کردیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ’’الیکسن‘‘ نامی شہری نے ملائیشیا پہنچنے کے بعد ایئرپورٹ سے گھر تک تقریباً 120 کلومیٹر کا فاصلہ پیدل طے کیا، اس دوران اسے پورے تین دن لگے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شہری کو خدشہ تھا کہ وہ اگر پبلک ٹرانسپورٹ استعمال کرے گا تو ممکنہ طور پر کروناوائرس کا شکار ہوسکتا ہے۔ اسی ضمن میں اس نے خود کو محفوظ رکھنے کے لیے پیدل چلنا مناسب سمجھا اور طویل فاصلے کی فکر کرتے ہوئے پالتو کتے کے ہمرا گھر پہنچ گیا۔

کروناوائرس: بھارت میں سڑکوں پر بندر بھوک سے تڑپنے لگے

ملائیشین شہر ’کوٹا کنیبالو‘ سے اپنے آبائی علاقے ’مادورو کنیبالو‘ پہنچنے میں اسے تین دن لگے اور فاصلہ تقریباً 120 کلو میٹر بنتا ہے۔ الیکسن کے سوشل میڈیا پر بھی خوب چرچے پھیل چکے ہیں۔

خیال رہے کہ 34 سالہ شہری نے جاپان میں 25 مارچ تک ملازمت کی تاہم کروناوائرس کے باعث اس نے سیلف آئسولیشن اختیار کرنے کے لیے اپنے وطن واپسی کا ارادہ کیا۔ مذکورہ شہری کی ایئرپورٹ پر اسکریننگ کی گئی تاہم کسی قسم کی علامات سامنے نہیں آئیں۔ تاہم اس کے باوجود شہری آئسولیشن میں چلا گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں