شوہر کے ہاتھوں نابینا ہوجانے والی خاتون وکیل بن گئیں -
The news is by your side.

Advertisement

شوہر کے ہاتھوں نابینا ہوجانے والی خاتون وکیل بن گئیں

اوٹاوا: خاوند کی جانب سے بدترین ظلم کے بعد نابینا ہوجانے والی بنگلہ دیشی خاتون نے کینیڈا سے وکالت کی اعلیٰ تعلیم مکمل کرلی۔

رومانہ منظور نامی یہ 38 سال بنگلہ دیشی خاتون نہایت تشدد پسند شوہر کے ساتھ زندگی گزارنے پر مجبور تھیں جس نے 5 سال قبل درندگی کا بدترین مظاہرہ کرتے ہوئے ایک جھگڑے میں رومانہ کی آنکھیں نوچ ڈالیں۔

اس کی اس حرکت کی وجہ سے رومانہ زندگی بھر کے لیے نابینا ہوگئیں۔

مزید پڑھیں: گھریلو تشدد کے خلاف آگاہی کا اشتہار وائرل

رومانہ کو اس وحشت و بربریت کے مظاہرے کے بعد سنبھلنے اور پھر سے زندگی کی طرف لوٹنے میں 2 سال لگے۔

اس کے بعد رومانہ اپنی 11 سالہ بیٹی کے ساتھ کینیڈا چلی آئیں اور دوستوں اور اہل خانہ کے ہمت دلانے کے بعد انہوں نے پھر سے اپنی تعلیم کا آغاز کیا۔

انتھک محنت کے بعد بالآخر وہ اپنی تعلیم مکمل کرنے میں کامیاب ہوئیں اور جس دن انہیں یونیورسٹی آف برٹش کولمبیا کی جانب سے ڈگری سے نوازا گیا وہ دن ان کی زندگی کا یادگار ترین دن تھا۔

اپنے کلاس فیلوز کی مدد سے اسٹیج پر پہنچنے کے بعد انہوں نے کہا، ’اس تمام سفر میں، میں یونیورسٹی انتظامیہ کی بہت شکر گزار ہوں جو اب میرے لے اہل خانہ کی سی حیثیت رکھتے ہیں‘۔

رومانہ کے مطابق اس تمام عرصے میں یونیورسٹی کے تمام اساتذہ، طلبا اور ایک ایک شخص نے ان کی مدد کی اور انہی کے خلوص کی مدد سے وہ اپنی تعلیم مکمل کرنے میں کامیاب ہوسکیں۔

مزید پڑھیں: عورت کے اندرونی کرب کے عکاس فن پارے

وہ کہتی ہیں، ’میرا نابینا ہوجانا میری زندگی کا بھیانک ترین واقعہ ہے جسے میں کبھی فراموش نہیں کرسکتی۔ تاہم زندگی آگے بڑھتے رہنے کا نام ہے‘۔

رومانہ اب اپنے اس تلخ دور کی یادوں سے خاصی حد تک باہر نکل آئی ہیں اور زندگی میں آگے بڑھنے کا حوصلہ رکھتی ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں