The news is by your side.

Advertisement

روس کا پاکستانی چاول کے حوالے سے بڑا ا علان

ماسکو: پاک روس تعلقات میں بہت بڑی پیش رفت ہوئی ہے، روس نے پاکستان سے چاول کی درآمد پر عائد پابندی ختم کردی ہے۔

پاکستان کی وزارت خوراک کی پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے جاری کردہ معلومات کے مطابق روس نے پاکستانی چاول کی روسی منڈیوں تک رسائی پر ایک طویل عرصے سے عائد پابندی کو ختم کردیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق روس کی جانب سے پاکستان سے چاول کی درآمد پر عائد پابندی اٹھانے کا اطلاق آج سے ہوجائےگا، روس نے پابندی اٹھانے کا فیصلہ وفاقی وزارت برائے نیشنل فوڈ سیکورٹی اینڈ ریسرچ کی جانب سے چاول تیار کرنے کے عمل میں ڈی پی پی پلانٹ کو اپنانے والی کوارنٹائن ڈویژن فائٹسوانٹری گائیڈنس دستاویز پر عمل درآمد کے بعد کیا ہے۔

ڈی پی پی کے ترجمان نے بتایا پاکستانی چاول کی درآمد پر عائد پابندیاں اٹھانے کے حوالے سے گزشتہ ایک سال سے روسی ادارے این پی پی او کے کے ساتھ روابط میں تھے، روسی ادارے کو تمام مطلوبہ تکنیکی معلومات اور پاکستان پلانٹ کوارنٹائن نظام پر مکمل عملدرآمد کا یقین دلایا گیا تھا۔ترجمان وزارت فوڈ سیکورٹی نے بتایا کہ روسی ادارے این پی پی او نے ابتدائی طور پر چاول تیار برآمد کرنے والے چار اداروں کی منظوری دے دی ہے، ان اداروں میں دو کراچی ، ایک لاہور سے ایک کا تعلق چنیوٹ سے ہے، چاول تیار کرنے والے اداروں کی جانب سے چاول کی فصل کو کیڑوں سے محفوظ بنانے اور دیگر ضروری اقدامات پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے گا۔

اطلاعات کے مطابق چاول یونٹوں کو دوسروں کی اجازت ڈی پی پی کے پلانٹ کی کوارنٹائن ڈویژن کے ذریعے ورچوئل تصدیق سے مشروط ہوگی، چاول کاشت کرنے والے کسانوں اور صنعتکاروں کی شاندار کامیابی پر وفاقی وزیر سید فخر امام کے کردار کی تعریف کی۔

یاد رہے روس کی جانب سے پاکستانی چاول پر پابندی 2018 میں لگائی گئی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں