The news is by your side.

Advertisement

روسی حکومت نے ٹوئٹر کیخلاف بڑا فیصلہ کرلیا، لیکن کیوں؟

ماسکو : روس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر مشروط پباندی لگانے کا فیصلہ کرلیا، حکام کی جانب سے دھمکی دی گئی ہے کہ متنازع مواد نہ ہٹایا گیا تو سنگین نتائج بھگتنا ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق روسی حکام نے کہا ہے کہ وہ ٹوئٹر کی رفتار کو کم کررہے ہیں، سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر انتطامیہ پابندی کے شکار مواد کو ہٹانے میں ناکام رہی جس کی وجہ سے وہ اس کیخلاف جوابی اقدام اٹھایا جارہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق روسی حکومت نے ٹوئٹر کو واضح الفاظ میں دھمکی بھی دی ہے کہ اگر اس نے ان کے مطالبات پورے نہیں کئے گئے تو وہ اسے مکمل طور پر بھی بند کرسکتے ہیں۔

اس حوالے سے روسی سرکاری کمیونیکیشن ریگولیٹری کا کہنا ہے ممنوعہ مواد ویب سائٹ سے نہ ہٹانے پر ٹوئٹر کا استعمال محدود کرنے کیلئے اس کی رفتار کم کررہے ہیں۔

ریگولیٹری حکام کا کہنا ہے کہ ممنوعہ اور غیرقانونی مواد کی موجودگی تک ٹوئٹر کی رفتار کم رہے گی، ٹوئٹر پر  ممنوعہ مواد پر مشتمل 3ہزارسے زائد پوسٹس موجود ہیں، ٹوئٹر ممنوعہ مواد پرمشتمل پوسٹس ہٹانے میں ناکام رہا تو مکمل پابندی عائد کردی جائے گی۔

دوسری جانب روسی صدارتی محل کریملن نے ردعمل میں کہا ہے کہ روس سوشل میڈیا پر پابندی نہیں چاہتا، تاہم سوشل میڈیا کی کمپنیاں بھی روسی قوانین پر عمل کریں۔

واضح رہے کہ امریکی کمپنی ٹوئٹر اور روسی حکومت کے درمیان تنازع اس وقت شروع ہوا جب ٹوئٹر نے مظاہروں  سے متعلق پوسٹ نہیں ہٹائی جس میں بچوں کو حکومت مخالف مظاہروں میں شرکت کرنے کی ترغیب دی گئی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں