The news is by your side.

Advertisement

روسی فوج کا بڑا حملہ، یوکرینی فورسز پیچھے ہٹنے پر مجبور ہو گئیں

کیف: روسی فورسز نے یوکرینی شہر سیویرو ڈونٹسک پر بڑا حملہ کر دیا ہے، جس کے بعد یوکرینی افواج پیچھے ہٹنے پر مجبور ہو گئیں۔

تفصیلات کے مطابق روس یوکرین جنگ میں شدت برقرار ہے، روسی فورسز کی یوکرین کے مختلف شہروں پر گولہ باری کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

روسی افواج نے سیویرو ڈونٹسک پر بڑا حملہ کرتے ہوئے یوکرینی فورسز کو پیچھے ہٹنے پر مجبور کر دیا اور شہر کا زیادہ تر علاقہ دوبارہ روس کے قبضے میں چلا گیا ہے۔

ماسکو نے یوکرین کے خوراک کے ذخیروں کے اڈوں پر بھی حملے تیز کر دیے ہیں، خبر رساں ایجنسی کے مطابق روسی حملوں کا مقصد بحیرہ اسود کو اپنی شرائط پر کھولنا ہے۔

رپورٹس کے مطابق روس یوکرین کی بندرگاہوں سے نکلنے والے بحری جہازوں کی حفاظت کی ذمہ داری دینے کو تیار ہے، اس سلسلے میں‌روسی وزیرِ خارجہ نے ترک ہم منصب کو یقین دہانی بھی کرا دی ہے، تاہم یوکرین نے روس کی یقین دہانی کو یکسر مسترد کر دیا ہے۔

شہر لوہانسک کے گورنر سیرحی ہیدائی نے میڈیا کو بتایا کہ شہر کا زیادہ تر حصہ اب روس کے قبضے میں ہے اور وہاں پھنسے ہوئے شہریوں کو بچانا اب ممکن نہیں رہا، ہماری افواج کا کنٹرول صرف شہر کے مضافات پر تک محدود ہو گیا ہے، تاہم لڑائی ابھی بھی جاری ہے، ہماری افواج سیویرو ڈونٹسک کا دفاع کر رہی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں