The news is by your side.

Advertisement

امریکا ایران جوہری معاہدے سے متعلق روسی مندوب کا دعویٰ

ویانا: روسی مندوب نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکا اور ایران کے درمیان جوہری معاہدے سے متعلق مذاکرات آئندہ جمعے کو ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کو ایران کے ساتھ جوہری معاہدے میں واپس لانے کے لیے ویانا میں ایک اجلاس منعقد کیا گیا، اجلاس میں چین، جرمنی، فرانس، روس اور برطانیہ کے اعلیٰ سفارت کاروں کے مابین ہونے والے مذاکرات میں اس معاہدے پر توجہ مرکوز کی گئی۔

روسی مندوب نے اس اجلاس کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ امریکا اور ایران کے درمیان جوہری معاہدے سے متعلق مذاکرات آئندہ جمعے کو ہوں گے، تاہم پیش رفت کی جلد توقع نہیں کرنی چاہیے۔

ایرانی حکام نے کہا ہے کہ ویانا مذاکرات میں ایران پر سے پابندیاں اٹھانے پر اتفاق ہو گیا ہے، آئل، بینکنگ اور دیگر سیکٹرز پر عائد پابندیاں ختم ہو جائیں گی۔

واضح رہے کہ ویانا میں ہونے والی سفارت کاروں کی اس ملاقات کے دوران امریکا کا کوئی نمائندہ موجود نہیں تھا۔

ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق ایران کے چیف جوہری مذاکرات کار نے ہفتے کے روز کہا کہ تہران توقع کرتا ہے کہ ویانا مذاکرات میں اب تک معاہدوں کی بنیاد پر تیل، بینکوں اور بیش تر افراد اور اداروں پر امریکی پابندیاں ختم کر دی جائیں گی۔

اس دوران روس اور مغربی یورپی طاقتوں نے آگے آنے والی بات چیت میں ایران اور امریکا کو 2015 کے جوہری معاہدے کی مکمل تعمیل میں لانے کے ہدف کے سلسلے میں متضاد رائے دی ہے، فی الوقت یہ مذاکرات چھ دن کے لیے ملتوی کر دیے گئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں