شام میں روسی طیارہ میزائل حملے میں تباہ، 15 فوجی ہلاک Russian military plane
The news is by your side.

Advertisement

شام میں روسی طیارہ میزائل حملے میں تباہ، 15 فوجی ہلاک

ماسکو : شام میں تعینات روسی فوجیوں کو ایئر بیس لانے والا روسی طیارہ بحیرہ روم میں پرواز کے دوران میزائل حملے میں تباہ ہوگیا جس کے نتیجے میں 15 روسی فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مشرق وسطیٰ میں خانہ جنگی سے دوچار ملک شام کے شہر الاذقیہ میں روس کا طیارہ آئی ایل 20 شامی میزائلوں کی زد میں آکر ہلاک ہوگیا جس کے نتیجے میں 15 روسی فوجی ہلاک ہوگئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ روس کا فوجی طیارہ شہر الاذقیہ سے واپس ایئر بیس کی جانب آرہا تھا کہ اچانک ساحل سے 35 کلومیٹر کی دوری پر بحیرہ روم پر پرواز کے دوران ریڈار سے غائب ہوگیا۔

روسی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ صیہونی ریاست اسرائیل کے جنگی طیارے اس دوران شامی شہروں کو اپنے ظلم و بربریت کا نشانہ بنارہے تھے اور روس کا فوجی طیارہ بھی اسی دوران علاقے میں پرواز کررہا تھا۔

روسی حکام کی جانب سے اسرائیل پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ اسرائیلی جنگی طیارو نے روسی آئی ایل 20 طیارے کو شامی دفاعی سسٹم کی جانب سے دھکیلا جس کے نتیجے میں اسرائیلی طیاروں پر فائر کیے جانے والے میزائلوں نے روسی طیارے کو ہدف بنالیا اورحادثہ پیش آیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ روسی حکام کی جانب سے صیہونی ریاست اسرائیل کو فوجی طیارے کی تباہی کا ذمہ دار ٹہراتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ روس بھرپور جوابی کارروائی کرے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ روسی وزارت دفاع نے طیارہ حادثے میں 15 فوجیوں کی ہلاکت کے بعد ماسکو میں تعینات اسرائیلی سفیر کو طلب کرکے شدید احتجاج کیا اور اسرائیل کے جنگی طیاروں کے حملے میں ہلاک ہونے والے فوجیوں کی موت کا ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔

دوسری جانب فلسطینیوں کا قتل عام کرنے والی غاصب صیہونی ریاست اسرائیل نے روسی فوجیوں کی طیارہ حادثے میں ہلاکت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جس دوران روسی طیارے پر میزائلوں سے حملہ کیا گیا اس وقت اسرائیل کے جنگی طیارے اسرائیلی حدود میں موجود تھے۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کےمطابق اسرائیل نے روسی طیارے کی تباہی میں مکمل طور پر شامی حکومت کو ذمہ دار قرار دیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں