The news is by your side.

Advertisement

صدام حسین کی بیٹی کا اپنے والد کیخلاف بڑا بیان

عراق کے سابق حکمران صدام حسین کی صاحبزادی کا کہنا ہے کہ میرے والد ہی نہیں بلکہ ساری دنیا ہی ڈکٹیٹر ہے، انہوں نے کویت پر لشکر کشی کرکے بڑی غلطی کی۔

صدام حسین کی بیٹی رغد صدام نے العربیہ چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے ماضی کی یادوں اور تاریخ کے کئی رازوں سے پردہ اٹھایا جن سے بہت سے لوگ اب تک ناواقف ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں کہ کیا آپ کے والد صدام حسین ڈکٹیٹر اور سفاک قائد تھے؟ جس پر رغد  صدام کا کہنا تھا کہ میرے والد ہی کیا پوری دنیا ہی ڈکٹیٹر ہے۔

انہوں نے کہا کہ عراق پر ناجائز قبضہ بھی امریکی آمریت کی ایک بڑی مثال ہے، اس بات کو امریکی عہدیدار بھی تسلیم کرچکے ہیں کہ انہوں نے عراق کے معاملے میں غلطیاں کیں۔

صدام حسین کی بیٹی نے کہا کہ امریکہ نے عراق کے حوالے سے جو غلط فیصلہ کیا۔ اس کا خمیازہ ملک کی مکمل تباہی، نوجوانوں، خواتین اور مردوں کی ہلاکت کی صورت میں نمودار ہوا۔

رغد صادم  نے اس بات کا بھی  اعتراف کیا کہ امریکہ نے عراق میں غلطی کی اور صدام حسین نے کویت پر لشکر کشی کرکے اس سے بڑی غلطی کی۔

صدام کی صاحبزادی کا کہنا تھا کہ مجھے یقین ہے کہ ایک نہ ایک دن میں عراق واپس جاؤں گی وہ میرا وطن ہے اور میری شدید خواہش ہے کہ اپنے ملک میں جا کر رہوں۔

یاد رہے کہ رغد صدام جنگ کے زمانے میں بغداد سے اپنے خاوند حسین کامل کے ہمراہ شام چلی گئی تھیں وہاں سے وہ اردن گئیں جہاں اب تک مقیم ہیں۔

صدام حسین کی صاحبزادی سے پوچھا کیا گیا کہ وہ عراق میں کوئی سیاسی کردارادا کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں؟ جس پر ان کا کہنا تھا کہ عراق کی سیاسی زندگی میں تمام آپشن کھلے ہوئے ہیں۔ تمام امکانات اور تمام راستے موجود ہیں کوئی بھی راستہ اختیار کیا جاسکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں