The news is by your side.

Advertisement

کراچی کے 2 اسپتالوں کے سرجیکل وارڈ بند کردیے گئے

کراچی : سندھ کے وزیر تعلیم سعید غنی کا کہنا ہے کہ کراچی کے دو اسپتالوں کے سرجیکل وارڈ بند کردیے گئے کیونکہ وہاں دو مریضوں کی سرجری ہوئی، دونوں کورونا کے مریض تو نہیں تھے لیکن سرجری کے بعد ان میں کورونا پایا گیا، یہ صورتحال تشویشناک ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے اپنے بیان میں کہا کہ جب تک شہری تعاون نہیں کریں، لاک ڈاؤن پر 100فیصد عملدرآمد نہیں کراسکتے، سندھ میں آج نمازجمعہ کے وقت ایس اوپیز کی خلاف ورزی کی گئی ، اگر ایسی ہی صورتحال رہی حالات مزید خراب ہوجائیں گے۔

سعید غنی کا کہنا تھا کہ سندھ میں دیگر صوبوں کے مقابلے میں لاک ڈاؤن سخت ہے، ہم جیسا لاک ڈاؤن توقع کررہے تھے ویسا نہیں ہے۔

وزیر تعلیم سندھ نے کہا کہ کراچی کے دو اسپتالوں کے سرجیکل وارڈ بند کردیے گئے، وہاں مریضوں کی سرجری ہوئی، دونوں کورونا کے مریض تو نہیں تھے لیکن سرجری کے بعد ان میں کورونا پایا گیا، سرجن ودیگراسٹاف کو قرنطینہ کردیا گیا ہے، یہ صورتحال تشویشناک ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر ایسے وارڈ بند ہونے شروع ہوگئے تو دیگر امراض میں مبتلا مریضوں کی دیکھ بھال نہیں ہوپائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں