لندن : برطانوی دائیا کا قتل، مجرم کو 17 برس قید کی سزا Midwife murderer
The news is by your side.

Advertisement

مڈ وائف کا قتل، عاشق کو17 سال قید کی سزا

لندن : برطانوی عدالت نے نرس کو قتل کرنے والے سنگدل شہری کو 17 برس قید کی سزا سناتے ہوئے جیل منتقل کرنے کا حکم سنا دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سنگدل قاتل مائیکل اسٹرلنگ نے دوران تفتیش سامانتا ایسٹ وڈ نامی نرس کے قتل کا اعتراف کرلیا تھا جس کے ساتھ گذشتہ تین برس سے تعلقات قائم تھے۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ مائیکل اسٹرلنگ 28 سالہ سامانتا ناایسٹ وڈ کو قتل کرکے لاش کو دفنانے کے بعد مقتول کی بہن کے ہمراہ پرسکون انداز میں موجود تھا۔

برطانوی عدالت نے اسٹرلنگ کو قتل کا جرم ثابت ہونے پر 17 برس قید کی سزا سنائی ہے۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ مقتولہ 27 جولائی کو رائل اسٹروک نامی اسپتال سے اپنی رات کی ڈیوٹی ختم کرکے گھر پہنچی تو مائیکل نے اسے گلا گھونٹ کر قتل کیا کردیا۔

پولیس کو سامانتا کے لاپتہ ہونے کے آٹھ روز بعد ایک میدان سے ساماتنا کی لاش برآمد ہوئی تھی، مقتولہ کی آنکھیں اور منہ کو ٹیپ جبکہ لاش کوشاپر میں لپیٹ کردفن کیا گیا تھا۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ مجرم مائیکل مقتولہ کے سابق محبوب کا بہنوئی ہے، سامانتا اور مائیکل کے درمیان گذشتہ تین برسوں سے تعلقات قائم تھے۔

برطانوی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ مائیکل مقتولہ کے موبائل فون سے مسلسل اہل خانہ کو پیغامات ارسال کرتا رہا تاکہ انہیں ایسا لگے کہ سامانتا زندہ ہے۔

برطانوی پولیس کے مطابق قاتل سامانتا کی ڈیوٹی ختم ہونے کے بعد روزانہ کی بنیاد پر مقتولہ سے ملاقات کرتا تھا۔

عدالت نے پولیس اور مقتولہ کے اہل خانہ کے بیانات سننے اور شواہد کے مدنظر رکھتے ہوئے مائیکل کو 17 برس قید کی سزا سناتے ہوئے جیل منتقل کرنے کا حکم دے دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں