The news is by your side.

Advertisement

سندھ کے وزیر تعلیم کی ’مشرف دور‘ میں قائم ہونے والے 7 ہزار اسکول بند کرنے کی سفارش

کراچی: وزیر تعلیم سندھ سردار شاہ نے کہا ہے کہ صوبے میں 7 ہزار نان فنکشنل اسکول بند کرنے کی سفارش کی، جس کو غلط انداز سے پیش کیا گیا۔

وزیر تعلیم نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پانچ ہزار نا فنکشنل اسکولوں کو بند کرنے کا فیصلہ کیا، ان میں سے1400 ایسے اسکول ہیں جو کہ کئی سالوں سے خراب حالت کی وجہ سے بند ہیں جبکہ 3600 ایسے اسکول ہیں جو کہ ایک دو کمروں پر مشتمل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان اسکولوں کو مشرف دور میں تعمیر کیا گیا، جن کی اب ضرورت محسوس نہیں ہوتی کیونکہ ایک گاؤں میں صرف ایک کمرے میں چار چار اسکول تعمیر کیے گئے۔

سردار شاہ نے اسکولوں کی تعمیر کو اُس دور کا سیاسی فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایک کمرے کے بنائے گئے اسکول صرف وہاں کے لوگوں کو خوش کرنے کے لئے تھے، اب وہ اسکول گاؤں کے وڈیرے کی اوطاق میں تبدیل ہو چکے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ان نان فکشنل اسکولوں میں زیادہ تعداد پرائمری اسکولوں کی ہے، جبکہ چند سیکنڈری اور الیمنٹری اسکول ہیں۔

سردار شاہ کا مزید کہنا تھا کہ ’ا ن اسکولوں میں تعینات اساتذہ کا کام کرنے کا دل نہیں چاہتا ہے اب ان سے کام لیں گے، کسی قریب کے فنکشنل اسکول میں ان کا تبادلہ کیا جائے گا‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں