The news is by your side.

Advertisement

سعودی شہری انڈونیشین ہوٹل میں‌ قیام نہ کریں، سعودی سفیر نے خبردار کردیا

ریاض: انڈونیشیا میں سعودی عرب کے سفیر اسامہ محمد عبداللہ نے سعودی شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ جکارتہ شہر میں واقعہ ہوٹل میں قیام سے گریز کریں۔

سعودی سفیر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری تنبیہ میں سعودی شہریوں کو بتایا کہ ہوٹل کے کمروں سے براہ راست اور لاکرز سے بالواسطہ چوریوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

اسامہ محمد عبداللہ کے مطابق سعودی شہری انڈونیشیا میں سیاحت کو پسند کرتے ہیں، نوجوان اور خاندانوں سمیت ہر عمر کے افراد یہاں چھٹیاں گزارنے آتے ہیں، رواں برس انڈونیشیا میں سعودی سیاحوں کی تعداد 166000 ہے جبکہ گزشتہ برسوں میں یہ تعداد 240000 کے قریب ہوتی تھی۔

سعودی سفیر کے مطابق سعودی سیاح جکارتہ کے پہاڑی علاقوں کا رخ کرتے تھے جبکہ اب وہ بالی جزیرے جیسے دیگر مقامات کا رخ بھی کرتے ہیں۔

اسامہ محمد عبداللہ نے واضح کیا کہ سعودی سیاح اب رشوت، بلیک میلنگ اور چوریوں کے حوالے سے چوکنا ہوچکے ہیں اور انڈونیشیا میں سعودی سفارتخانہ سعودی سیاحوں کے تمام امور کا جائزہ لے رہا ہے، سفارتخانے میں چوبیس گھنٹے سعودی سیاحوں کی شکایات کا جائزہ لیا جارہا ہے۔

مذکورہ ہوٹل کے حوالے سے سعودی نے کہا کہ شکایات کے درست ہونے کا جائزہ لے رہے ہیں، اس ہوٹل میں چوری کی کافی شکایات آچکی ہیں جو ناقابل قبول امر ہے۔

سعودی سفیر نے کہا کہ اس حوالے سے سیاحوں کو متنبہ نہ کرنا ناگزیر تھا کہ وہ یہاں کا رخ نہ کریں اور ہوٹل انتظامیہ بھی جان لے کہ چوری کی وارداتوں پر قابو نہ پایا گیا تو وہ اپنے صارفین کو کھو دیں گے، یہ بھی اطلاعات ہیں کہ ہوٹل انتظامیہ چوروں سے ملی ہوئی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں