The news is by your side.

سعودی عرب میں شروع ہوا انوکھا مقابلہ حسن

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں جاری دنیا میں اونٹوں کے سب سے بڑے میلے کنگ عبدالعزیز فیسٹیول میں اونٹنیوں کے مقابلہ حسن شروع ہوگیا ہے۔

مقابلہ حسن تو آپ نے بہت دیکھے ہوں گے جس میں ریمپ پر خوبصورت حسینائیں‌ اپنے حسن کے جلوے بکھیرتی ہیں لیکن اگر آپ سعودی عرب میں ہیں تو آپ کو مقابلہ حسن تو ملے گا لیکن نازک اندام حسیناؤں کا نہیں بلکہ ریگستانوں کے جہاز اونٹنیوں کا۔

اونٹ سعودی عرب کا قومی جانور اور ثقافتی پہچان ہے، ہر سال یہاں اونٹوں کا سب سے بڑا میلہ کنگ عبدالعزیز فیسٹیول منعقد کیا جاتا ہے، جس میں ملک بھر سے اونٹ لائے جاتے ہیں اور لاکھوں افراد اس فیسٹیول میں شرکت کرتے ہیں۔

فیسٹیول کے شرکا کی سب سے زیادہ دلچسپبی اونٹنیوں کے مقابلہ حسن میں ہوتی ہے جو اب شروع ہوچکا ہے۔

مقابلہ حسن میں شرکت کا معیار جان کر حیران نہ ہوں، یہاں مقابلے میں شرکت کا معیار گلاب کی پنکھڑی جیسے نازک ہونٹ، ستواں ناک اور بل کھاتی کمر نہیں بلکہ لمبے اور لٹکے ہوئے ہونٹ، بڑی ناک اور کوہان کی شکل ہے۔

مقابلہ جیتنے والی خوبصورت اونٹنی کے مالک کو 6 کروڑ 60 لاکھ ڈالر کا بھاری انعام دیا جاتا ہے، اس بھاری انعام کے لالچ میں اب اونٹنیوں کے مالکان جعلسازی بھی کرنے لگے ہیں۔

لیکن مصنوعی طریقوں سے اونٹنیوں کے حسن میں اضافے کے انکشاف کے بعد منتظمین بھی ہوشیار ہوگئے ہیں  جس کے بعد  مقابلہ حسن میں شرکت کرنا اتنا آسان نہیں رہا، اب کڑی جانچ پڑتال کے بعد اونٹنیوں کو اس مقابلے میں شرکت کا اہل قرار دیا جاتا ہے۔

امسال بھی مقابلے میں شرکت سے قبل ماہرین نے اونٹنیوں کا ان کی شکل وصورت اور چلنے کے انداز کا معائنہ کیا، جدید ایکسرے، تھری ڈی الٹراساؤنڈ سے سر، گردن اور دھڑ کے عکس لیے اور جنیاتی معائنے سمیت خون کے ٹیسٹ کیے گئے اور 40 کے قریب اونٹنیوں کو خوبصورتی کے لیے بوٹوکس انجکشن لگانے پر نااہل قرار دیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں